اب تو کچھ اور بھی اندھیرا ہے

intelligent086

TM Star
Nov 10, 2010
3,871
3,839
1,313
Lahore,Pakistan
اب تو کچھ اور بھی اندھیرا ہے
یہ مری رات کا سویرا ہے

رہزنوں سے تو بھاگ نکلا تھا
اب مجھے رہبروں نے گھیرا ہے

آگے آگے چلو تبر والو
ابھی جنگل بہت گھنیرا ہے

قافلہ کس کی پیروی میں چلے
کون سب سے بڑا لٹیرا ہے

سر پہ راہی کے سربراہی نے
کیا صفائی کا ہاتھ پھیرا ہے

سرمہ آلود خشک آنسوؤں نے
نور جاں خاک پر بکھیرا ہے

راکھ راکھ استخواں سفید سفید
یہی منزل یہی بسیرا ہے

اے مری جان اپنے جی کے سوا
کون تیرا ہے کون میرا ہے

سو رہو اب حفیظؔ جی تم بھی
یہ نئی زندگی کا ڈیرا ہے
 
  • Like
Reactions: maria_1
Top
Forgot your password?