اس دنیا کے مرد

intelligent086

Super Star
Nov 10, 2010
5,671
5,716
1,313
Lahore,Pakistan
اس دنیا کے مرد
115465

٭ دنیا میں مردوں کی اوسط عمر عورتوں سے تقریباً چار برس کم ہے۔ مردوں کی اوسط عمر 64.52 برس جبکہ عورتوں کی 68.76 برس ہے۔ ٭ دنیا میں اندازاً 107 لڑکوں کے مقابلے میں 100 لڑکیاں پیدا ہوتی ہیں۔ سائنس دانوں کا خیال ہے کہ لڑکوں کی زیادہ شرح پیدائش کا تعلق ان کی زیادہ شرح اموات سے ہے۔ عالمی سطح پر شیرخوار لڑکوں کے مرنے کا امکان شیرخوار لڑکیوں کی نسبت 25 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ ٭ بالغ مرد کے دماغ کا سائز بالغ عورت کے دماغ کی نسبت 10 فیصدبڑا ہوتا ہے۔ اس کا سبب یہ ہے کہ عورتوں کی نسبت مردوں کے پٹھوں کا حجم زیادہ اور جسم بڑا ہوتا ہے، اور اسی حساب سے انہیں جسم کو کنٹرول کرنے کے لیے زیادہ نیورانز کی ضرورت ہوتی ہے۔ ٭ لڑکے کے لیے انگریزی کے لفظ ’’بوائے‘‘ کے استعمال کے ابتدائی شواہد1154ء کے ہیں۔ اس لفظ کے ماخذ کے بارے میں یقینی طور پر معلوم نہیں لیکن خیال کیا جاتا ہے کہ یہ اینگلو سیکسن لفظ بویا سے نکلا ہے جس کے معنی ’’خدمت گار‘‘ یا ’’کھیتوں پر کام کرنے والا‘‘ ہیں۔ ٭ لڑکوں میں آٹزم کے خلل کی تشخیص کا امکان لڑکیوں کی نسبت تین سے چار گنا زیادہ ہوتا ہے۔ بعض ماہرین کے مطابق اس کا سبب لڑکیوں کی آٹزم کی کم شدیدعلامات پر قابو پانے یا انہیں چھپا لینے کی صلاحیت ہے۔ ٭ لڑکوں میں توجہ کی کمی کے خلل ’’اٹینشن ڈیفیشٹ ڈس آرڈر‘‘ کا امکان لڑکیوں کی نسبت تین گنا زیادہ ہوتا ہے۔ ٭ امریکی ورک فورس کا 50 فیصد مردوں پر مشتمل ہے لیکن دورانِ ملازمت ان کی ہلاکتیں 94 فیصد ہیں۔ لڑکوں اور مردوں میں ٹیسٹوسٹیرون ہارمون کی زیادہ سطح کی وجہ سے ان میں جارحیت، مسابقت، اپنا دعویٰ منوانے اور خودمختاری کا رجحان زیادہ ہوتا ہے۔ ان کے دماغ میں جذبات پیدا کرنے والا حصہ امیگڈالا زیادہ بڑا ہوتا ہے۔ ٭ دنیا کے تقریباً تمام ممالک میں عورتوں کی نسبت مردوں میں خودکشی کا تناسب دگنا ہے۔ بعض ممالک، جیسا کہ روس اور برازیل میں مردوں میں یہ تناسب چھ گنا زیادہ ہے۔ ٭ سائنس دانوں کے مطابق عورتوں اور مردوں کا دماغ قدرے مختلف انداز میں افعال سرانجام دیتا ہے۔ کسی کام پر توجہ مرکوز کرتے وقت مردوں میں دماغ کی ایک سائیڈ استعمال کرنے کا رجحان ہے اور وہ ساری توجہ اس ایک کام پر دیتے ہیں۔ اس کے برخلاف عورتیں دماغ کی دونوں اطراف ایک ہی وقت میں استعمال کرتی ہیںجس کے باعث وہ ایک وقت میں مختلف کام کرنے کے قابل ہوتی ہیں۔ ٭ انگریزی میں لفظ ’’ڈیڈ‘‘ سولہویں صدی میں داخل ہوا۔ خیال کیا جاتا ہے کہ یہ ویلش لفظ ’’ٹیڈ‘‘ سے اخذ ہوا جس کے معنی والد کے ہیں۔ لفظ ’’فادر‘‘ قدیم انگریزی اصطلاح ’’فائیڈر‘‘ سے نکلا اور سب سے پہلے 1500ء کی دہائی میں مستعمل ہوا۔ ٭ اونچی ایڑھی والے جوتوں کا رواج ابتدا میں مردوں میں تھا، بعد میں اسے عورتوں نے اپنایا۔ ٭ ’’فادرڈے‘‘ کی پہلی تقریب 19 جون 1910ء میں امریکی ریاست واشنگٹن کے شہر سپوکین میں ہوئی۔ اس کا خیال سونڈرا ڈوڈ کو آیا۔ ’’مدرڈے‘‘ کے بارے میں سننے کے بعد اس کے ذہن میں والد کو خراج تحسین کا خیال آیا۔ ٭ یہ امر دلچسپی سے خالی نہیں کہ اوسطاً ایک بالغ مرد کے جسم میں بالغ عورت کی نسبت 50 فیصد کم چربی ہوتی ہے اور پٹھوں کا حجم 50 فیصدزیادہ ہوتا ہے۔ ٭ سوویت یونین میں 1923ء میں پیدا ہونے والے 80 فیصد مرد دوسری عالمی جنگ میں زندہ نہ رہے۔ ٭ جنگِ پیراگوئے (1864 -1870ئ) پیراگوئے کے مردوں کے لیے تباہ کن ثابت ہوئی۔ جنگ کے اختتام پر پورے ملک میں صرف 26 ہزار مرد زندہ بچے۔ ملک کے کچھ علاقوں میں عورتوں اور مردوں کی آبادی کی شرح 20:1 تک پہنچ گئی۔ ٭ سوئٹزرلینڈ میں ہر مرد کے لیے فوجی تربیت اور ہتھیار اپنے پاس رکھنا لازمی ہے۔ اس کی وجہ سے ملک میں بندوق رکھنے والوں کی شرح بہت زیادہ ہے۔ ٭ مردوں میں پروسٹیٹ سرطان کا امکان عورتوں میں چھاتی کے سرطان کی نسبت 35 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ ٭ آپ شیونگ پر کتنا وقت صرف کرتے ہیں؟ ایک اندازے کے مطابق باقاعدگی سے شیو کرنے والے افراد اپنی زندگی کے تقریباً چھ ماہ اس عمل میں گزارتے ہیں۔ ٭ مردوں پرمردوعورت دونوں کے حملوں کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔ ٭ مردوں کی جلد عورتوں کی نسبت 25 فیصد زیادہ موٹی ہوتی ہے۔ ان میں پروٹین کولاجن کی کثافت زیادہ ہوتی ہے۔ مردوں کی ہڈیاں عورتوں سے زیادہ مضبوط اور کثیف ہوتی ہیں۔ ٭ 14 سے 51 برس کی عمر کی عورتوں کو غذا میں مردوں سے زیادہ فولاد کی ضرورت ہوتی ہے۔ ٭ ورزش کرنے کے دوران عورتیں بنیادی طور پر چربی کو بطور ایندھن استعمال کرتی ہیں جبکہ مرد کاربوہائیڈریٹس کو۔ مردوں کو عورتوں سے زیادہ حراروں کی ضرورت ہوتی ہے۔ ٭ مردوں اور عورتوں کے سائز، پٹھوں کے حجم اور حراروں کی ضرورت میں اختلاف کے پیش نظر مردوں کو غذا میں زیادہ پروٹین چاہیے ہوتی ہے۔ دوسری طرف ماں بننے کی عمر میں عورتوں کو زیادہ فولیٹ کی ضرورت ہوتی ہے۔ یہ مردوں اور عورتوں کے لیے ایک لازمی وٹامن ہے۔

 
  • Like
Reactions: maria_1
Top
Forgot your password?