صبح سویرے جاگو،، تحریر : نجف زہرا تقوی

intelligent086

TM Star
Nov 10, 2010
1,663
1,591
1,213
Lahore,Pakistan
صبح سویرے جاگو،، تحریر : نجف زہرا تقوی


گزرت وقت اور بدلتے زمانے کے ساتھ ہم اپنی بہت سی اچھی روایات اور عادتیں ترک کرتے جا رہے ہیں۔ان ہی میں سے ایک صبح خیزی کی عادت بھی ہے،لیکن اگر آپ اس عادت کو اپنانا چاہیں تو یہ کوئی ایسا مشکل کام نہیں ہے،سو آج سے ہی طے کر لیں کہ اگلی صبح جلد بیدار ہوں گی۔صبح سویرے اٹھنے کے بے شمار فائدوں سے استفادہ حاصل کریں۔ سویرے جاگنا ایک فطری عمل ہے،یہی وجہ ہے کہ جو افراد صبح خیزی کے عادی ہوتے ہیں وہ نہ صرف تازہ دم رہتے ہیں بلکہ ہشاش بشاش بھی رہتے ہیں۔

ایک تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ دیر سے جاگنا آپ کو دن بھر سستی کاشکار رکھتا ہے اور یوں آپ کے سارے کام لیٹ ہوتے چلے جاتے ہیں۔صبح سویرے اُٹھنے والے زیادہ خوش و خرم رہتے ہیں اور نسبتاً مثبت سوچ کے مالک ہوتے ہیں۔

خواتین کے لیے یہ جاننا بہت کار آمد ہے کہ دیر سے سونے والے لوگ ایک د ن میں248کیلوریز زیادہ استعمال کرتے ہیں،دو گنا فاسٹ فوڈ کھا لیتے ہیں اور سحر خیز افراد کے مقابلے میں آدھے پھل اور سبزیاں بھی نہیں کھاتے۔نارتھ ویسٹرن یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق رات دیر سے سونے والے افراد کا کولیسٹرول لیول عموماً بڑھا ہوا ہوتا ہے۔جبکہ جرمنی میں کی جانے والی ایک اور تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ صبح جلدی اٹھنے والوں میں ذہنی تنائو اور ڈپریشن بہت کم حد تک دیکھنے میں آیا ہے۔صبح سویرے اٹھنے کے عادی افراد زیادہ پُر اعتماد اور باعمل ہوتے ہیں اور جب بھی کسی معاملے میں پیش قدمی کی ضرورت ہو تو اس میں تاخیر نہیں کرتے۔

صبح سویرے اٹھنے کے بے شمار فائدے ہونے کے باوجود ہم اپنی سستی اور کاہلی کے سبب ان تمام فائدوں سے محروم رہ جاتے ہیں۔یوں تو گھر کے تمام افراد کو جلد اٹھنے کی عادت اپنانی چاہیے لیکن حقیقت یہ ہے کہ خاتونِ خانہ ہونے کی حیثیت سے جہاں آپ پر دیگر ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں وہیں یہ بھی آپ کی ذمہ داری ہے کہ خود جلدی اُٹھ کر گھر کے دوسرے افراد کے لیے مثال قائم کریں تا کہ وہ بھی آپ کی تقلید کریں۔

بچے زیادہ تر وہی عادتیں اپناتے ہیں جن پر ماں عمل کرتی ہے،لہٰذا بچے تو سب سے پہلے اس معمول کو اپنائیں گے۔اس کے علاوہ آپ دیکھیں گی کہ جلدی اٹھنے کے باعث آپ کے وقت میں اس قدر برکت ہو گی کہ سہولت کے ساتھ تمام کام نمٹانے کے بعد بھی آپ کے پاس خاصا وقت بچ جائے گا۔اسی دوران سحر خیزی کی عادت کو اپنا معمول بنائیںا ور پھر اس پر قائم رہیں۔یہ ایک ایسا موقع ہے جس سے آپ بھر پور فائدہ اٹھا سکتی ہیں،کیونکہ اہلِ مغرب کی ایک تحقیق کے نتیجے میں اس بات کا سراغ ملا ہے کہ اگر آپ صبح جلد اٹھنے کی عادت اپنانا چاہتے ہیں تو اس کے لیے کسی نہ کسی طرح تیس دنوں کے لیے صبح سویرے اٹھنے پر عمل کریں۔اس کے بعد آپ خو د بخود اس معمول کی عادی ہو جائیں گی۔اس کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہو گا کہ آپ دن بھر پُر سکون رہیں گی ،کیونکہ آپ کو کوئی بھی کام نمٹانے کی افراتفری نہیں ہو گی اور ہر کام اپنے مقررہ وقت کے اندر پورا کرسکیں گی۔
 

maria_1

Senior Member
Jul 7, 2019
601
481
63
صبح سویرے جاگو،، تحریر : نجف زہرا تقوی


گزرت وقت اور بدلتے زمانے کے ساتھ ہم اپنی بہت سی اچھی روایات اور عادتیں ترک کرتے جا رہے ہیں۔ان ہی میں سے ایک صبح خیزی کی عادت بھی ہے،لیکن اگر آپ اس عادت کو اپنانا چاہیں تو یہ کوئی ایسا مشکل کام نہیں ہے،سو آج سے ہی طے کر لیں کہ اگلی صبح جلد بیدار ہوں گی۔صبح سویرے اٹھنے کے بے شمار فائدوں سے استفادہ حاصل کریں۔ سویرے جاگنا ایک فطری عمل ہے،یہی وجہ ہے کہ جو افراد صبح خیزی کے عادی ہوتے ہیں وہ نہ صرف تازہ دم رہتے ہیں بلکہ ہشاش بشاش بھی رہتے ہیں۔

ایک تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ دیر سے جاگنا آپ کو دن بھر سستی کاشکار رکھتا ہے اور یوں آپ کے سارے کام لیٹ ہوتے چلے جاتے ہیں۔صبح سویرے اُٹھنے والے زیادہ خوش و خرم رہتے ہیں اور نسبتاً مثبت سوچ کے مالک ہوتے ہیں۔

خواتین کے لیے یہ جاننا بہت کار آمد ہے کہ دیر سے سونے والے لوگ ایک د ن میں248کیلوریز زیادہ استعمال کرتے ہیں،دو گنا فاسٹ فوڈ کھا لیتے ہیں اور سحر خیز افراد کے مقابلے میں آدھے پھل اور سبزیاں بھی نہیں کھاتے۔نارتھ ویسٹرن یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق رات دیر سے سونے والے افراد کا کولیسٹرول لیول عموماً بڑھا ہوا ہوتا ہے۔جبکہ جرمنی میں کی جانے والی ایک اور تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ صبح جلدی اٹھنے والوں میں ذہنی تنائو اور ڈپریشن بہت کم حد تک دیکھنے میں آیا ہے۔صبح سویرے اٹھنے کے عادی افراد زیادہ پُر اعتماد اور باعمل ہوتے ہیں اور جب بھی کسی معاملے میں پیش قدمی کی ضرورت ہو تو اس میں تاخیر نہیں کرتے۔

صبح سویرے اٹھنے کے بے شمار فائدے ہونے کے باوجود ہم اپنی سستی اور کاہلی کے سبب ان تمام فائدوں سے محروم رہ جاتے ہیں۔یوں تو گھر کے تمام افراد کو جلد اٹھنے کی عادت اپنانی چاہیے لیکن حقیقت یہ ہے کہ خاتونِ خانہ ہونے کی حیثیت سے جہاں آپ پر دیگر ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں وہیں یہ بھی آپ کی ذمہ داری ہے کہ خود جلدی اُٹھ کر گھر کے دوسرے افراد کے لیے مثال قائم کریں تا کہ وہ بھی آپ کی تقلید کریں۔

بچے زیادہ تر وہی عادتیں اپناتے ہیں جن پر ماں عمل کرتی ہے،لہٰذا بچے تو سب سے پہلے اس معمول کو اپنائیں گے۔اس کے علاوہ آپ دیکھیں گی کہ جلدی اٹھنے کے باعث آپ کے وقت میں اس قدر برکت ہو گی کہ سہولت کے ساتھ تمام کام نمٹانے کے بعد بھی آپ کے پاس خاصا وقت بچ جائے گا۔اسی دوران سحر خیزی کی عادت کو اپنا معمول بنائیںا ور پھر اس پر قائم رہیں۔یہ ایک ایسا موقع ہے جس سے آپ بھر پور فائدہ اٹھا سکتی ہیں،کیونکہ اہلِ مغرب کی ایک تحقیق کے نتیجے میں اس بات کا سراغ ملا ہے کہ اگر آپ صبح جلد اٹھنے کی عادت اپنانا چاہتے ہیں تو اس کے لیے کسی نہ کسی طرح تیس دنوں کے لیے صبح سویرے اٹھنے پر عمل کریں۔اس کے بعد آپ خو د بخود اس معمول کی عادی ہو جائیں گی۔اس کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہو گا کہ آپ دن بھر پُر سکون رہیں گی ،کیونکہ آپ کو کوئی بھی کام نمٹانے کی افراتفری نہیں ہو گی اور ہر کام اپنے مقررہ وقت کے اندر پورا کرسکیں گی۔

Thanks 4 informative and useful sharing
 
  • Like
Reactions: intelligent086
Top
Forgot your password?