طاقت کے 8 خزانے

intelligent086

Super Star
Nov 10, 2010
5,671
5,716
1,313
Lahore,Pakistan
طاقت کے 8 خزانے
115312


ایمی میکینا

اس امر سے یقینا ہم سب واقف ہیں کہ صحت برقرار رکھنے کے لیے متوازن غذا کھانی چاہیے۔ جہاں تک فوائد کا تعلق ہے، تمام غذائیں مساوی تخلیق نہیں ہوئیں۔ بعض طاقت اور غذائیت کا قدرتی خزانہ ہوتی ہیں جن کی ہم سری دوسروں کے بس کی بات نہیں ہوتی۔ یہاں پر کچھ ایسی ہی غذاؤں کا ذکر ہے۔ ان میں سے چند ایک کے بارے آگاہی کم ہے۔ چیا بیج چیا بیج (Chia seeds) اومیگا۳ فیٹی ایسڈز کا زبردست ذریعہ ہیں۔ ان سے لحمیات، ریشہ، کیلشیم اور میگنیزیم کی بھی اچھی خاصی مقدار مل جاتی ہے۔ بعض افراد کے نظام انہضام کو متاثر کرنے والی گلوٹن ان میں شامل نہیں ہوتی۔ چیا بیجوں کو مکمل حالت میں بآسانی ہضم کیا جا سکتا ہے، انہیں کھانے کے اوپر چھڑکا، کسی مائع کے ساتھ ملایا یا پڈنگ کی شکل میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ کرم کلا پتوں والی اس سبزی میں بہت سے اینٹی اوکسیڈنٹس پائے جاتے ہیں۔ کرم کلا (Kale ) حیاتین اے، سی اور کے کا اچھا ذریعہ ہے۔ اس میں لحمیات، ریشہ، کیلشیم اور اومیگا ۳ فیٹی ایسڈ کی قسم الفا لینولینک ایسڈ پائے جاتے ہیں۔ تحقیقات سے معلوم ہوا ہے کہ اسے کھانے سے صحت کو بہت سے فائدے پہنچتے ہیں جن میں دل کے امراض، سرطان، موتیا بند اور پٹھوںکے انحطاط سے بچاؤ شامل ہیں۔ اسے عام طور پر بھونا یا بھاپ سے پکایا جاتا ہے۔کچی کرم کلا سلاد میں ڈالی جاتی ہے۔ کوینوا کوینوا (Quinoa) ایک پودے کا بیج ہے جس کے چھوٹے چھوٹے بیج لحمیات سے بھرپور ہوتے ہیں۔ ان میں تمام 9 امینو ایسڈز پائے جاتے ہیں۔ اسی لیے یہ نباتات سے مکمل لحمیات کے حصول کے چند ذرائع میں سے ہیں۔ ان میں ریشہ اور تیل زیادہ مقدار میں پائے جاتے ہیں اور یہ فولاد، میگنیزیم، فاسفورس، پوٹاشیم، کیلشیم، جست، تانبا، حیاتین ای، اور متعدد اینٹی اوکسیڈنٹس کا اچھا ذریعہ ہیں۔ ان میں بھی گلوٹن نہیں پائی جاتی۔ کوئینووا کو عام طور پر چاول کی طرح ابالا جاتا ہے۔ میٹھی اور نمکین ڈشز میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ اسے پیس کر بنائے گئے آٹے سے کھانے کی مختلف اشیا بنائی جاتی ہیں۔ اخروٹ اخروٹ الفا لینولینک ایسڈ نامی اومیگا ۳ فیٹی ایسڈ کا شاندار ذریعہ ہیں۔ ان میں تانبا، میگنیزیم اور فاسفورس اچھی مقدار میں پائے جاتے ہیں۔ طبی تحقیقات کے مطابق اخروٹ میں کولیسٹرول کی مقدار کم ہوتی ہے اور یہ دل اور وریدوں کے افعال میں بہتری لاتا ہے۔ اخروٹ کو مکمل کھایا اور ’’بیک‘‘ کی گئی اشیا، سلاد اور مختلف ڈشز میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ بلیو بیری بلیو بیری یا نیلا بیر چھوٹے سہی لیکن ریشے، حیاتین سی، ’’کے‘‘، میگنیز اور فولاد کے ساتھ متعدد اینٹی اوکسیڈنٹس بشمول انتھوسیانین کا بہترین ذریعہ ہیں۔ تحقیقات کے مطابق نیلے بیر کے فوائد ایک سے بڑھ کر ایک ہیں۔ ان میں دل کے دورہ کے خطرے میں کمی، سرطان سے لڑنے میں مدد اور ادراکی انحطاط کو روکنے میں معاونت شامل ہیں۔ یہ مزیدار بیر عموماً تازہ حالت میں کھائے جاتے ہیں۔نیز ’’بیک‘‘ کی گئی اشیا میں ملائے جاتے ہیں۔ کھٹا شاہ دانہ کٹھا شاہ دانہ یا ٹارٹ چیری اینٹی اوکسیڈنٹس سے بھرپور ہوتی ہے۔ بیشتر پھلوں اور سبزیوں کی نسبت اس میں سوزش کم کرنے والا اینٹی اوکسیڈنٹ انتھوسیانین زیادہ ہوتا ہے۔ متعدد تحقیقات سے معلوم ہوا ہے کہ اسے مکمل کھانے یا اس کا رس پینے سے صحت کو مختلف طرح کے فوائد حاصل ہوتے ہیں، ان میں سخت ورزش کے بعد پٹھوں کی درستی، جوڑوں کی سوزش میں کمی، نیند میں بہتری، دل کے دورے اور ذیابیطس کے امکان میں کمی اور وزن کو مناسب رکھنے میں مدد شامل ہیں۔ قنب کے بیج قنب کے بیج ( hemp seeds) انتہائی چھوٹے اور غذائیت سے بھرپور ہوتے ہیں۔ اگرچہ انہیں ایک نشہ آور پودے سے حاصل کیا جاتا ہے لیکن یہ خود نشے کے اثرات سے پاک ہوتے ہیں۔ ان میں ریشہ اور لحمیات کی اچھی خاصی مقدار ہوتی ہے۔ یہ حیاتین اور معدنیات جیسا کہ کیلشیم، فولاد، میگنیزیم، پوٹاشیم اور حیاتین ای کا شاندار ذریعہ ہیں۔ ان میں تمام بنیادی امینو ایسڈز ہوتے ہیں اور یہ بنیادی فیٹی ایسڈز، جیسا کہ اومیگا۳ اور اومیگا۶ کا اچھا ذریعہ ہیں۔ ان بیجوں کو مختلف طرح کے کھانوں پر چھڑکا جا سکتا ہے اور پھلوں کے مشروبات میں ملایا جا سکتا ہے۔ یہ مختلف ڈشز میں بھی استعمال ہو سکتے ہیں۔ ٹیف انتہائی چھوٹے دانوں پر مشتمل یہ غلہ مشرقی افریقہ میں عام غذا ہے۔ شاندار غذائی اہمیت کے سبب اب ٹیف (Teff) کو عالمی شہرت حاصل ہو رہی ہے۔ ان میں متعدد حیاتین اور معدنیات کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے، جن میں کیلشیم، فولاد، میگنیزیم، جست اور حیاتین سی شامل ہیں۔ ان میں لحمیات اور ریشے کی مقدار بھی اچھی خاصی ہوتی ہے اور یہ گلوٹن سے مبرا ہوتے ہیں۔انہیں آٹا بنایا کریا سالم استعمال کیا جا سکتا ہے۔ (ترجمہ: رضوان عطا)
 
Top
Forgot your password?