فضائلِ ذکر از زنیرہ گل

Zunaira_Gul

*GUL*
TM Star
May 16, 2017
2,482
1,677
363
بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

السلام علیکم

محترمہ سیماب صاحبہ کی مشکور ہوں کہ انہوں نے فضائلِ ذکر پر لڑی بنانے
کا حکم صادر فرمایا موضوع تو کافی طویل ہے لیکن کوشش کرتی ہوں کہ مختصر کر کے پیش کروں

اللہ تبارک وتعالیٰ نے ذکر کی فضیلت و اہمیت اس طرح قرآن میں واضح کر دی ہے کہ سورہ عنکبوت میں فرمایا

" وَلَذِكۡرُ اللّٰهِ اَكۡبَرُ ‌ؕ "


ترجمہ : بیشک اللہ کا ذکر سب سے بڑا ہے

آقا ﷺ جب صحابہ کو دعوت و تبلیغ یا جہاد و قتال کی تلقین فرماتے وہیں پر ذکر و اذکار کی تلقین بھی فرمایا کرتے تھے
میدان جہاد میں بھی ذکر لازمی جز تھا
ارشاد خداوندی ہے


(يٰۤاَيُّهَا الَّذِيۡنَ اٰمَنُوۡۤا اِذَا لَقِيۡتُمۡ فِئَةً فَاثۡبُتُوۡا وَاذۡكُرُوا اللّٰهَ كَثِيۡرًا لَّعَلَّكُمۡ تُفۡلِحُوۡنَ‌ۚ‏ ( ۴۵...سُوۡرَةُ الاٴنفَال


اے ايمان والو! جب (دشمن کي) کسي فوج سے تمہارا مقابلہ ہو تو ثابت قدم رہا کرو اور اللہ کو کثرت سے ياد کيا کرو تاکہ تم فلاح پاجاؤ، ﴿۴۵

اللہ تعالیٰ کا ذکر اطمینانِ قلب اور راحت جاں کا سبب ہے

ذکر الہٰی یادِ الہٰی سے عبارت ہے ذکر الہٰی کا مفہوم یہ ہے کہ بندہ ہر وقت اور ہر حالت میں۔ اٹھتے بیٹھتے اور لیٹتے اپنے معبود حقیقی کو یاد رکھے اور اس کی یاد سے کبھی غافل نہ ہو۔

اب ایک حقیقت کی طرف آتی ہوں ذکر الہٰی ہر عبادت کی اصل ہے تمام جنوں اور انسانوں کی تخلیق کا مقصد عبادت الہٰی ہے اور تمام عبادات کا
مقصودِ اصلی یادِ الہٰی ہے کوئی عبادت اور کوئی نیکی اللہ تعالیٰ کے ذکر اور یاد سے خالی نہیں۔

نماز کو لیجیے نماز کا یہی مقصد ہے کہ اللہ تعالیٰ کے ذکر کو دوام حاصل ہو اور وہ ہمشہ جاری رہے
روزہ کو لیجیے روزے کا مقصد دل کو ذکر الہٰی کی طرف راغب کرنا ہے
تلاوت قرآن کو لیجیے قرآن حکیم پڑھنا افضل ہے کیونکہ یہ اللہ تعالیٰ کا کلام ہے اور سارے کا سارا اسی کے ذکر سے بھرا ہوا ہے، اس کی تلاوت
اللہ تعالیٰ کے ذکر کو تر و تازہ رکھتی ہے


ایک اور حدیث میں ہے کامل بندہ وہ ہے جو دشمن کے مقابلے کے وقت میرا ذکر کرتا رہے یعنی اس حال میں بھی میرے ذکر کو مجھ سے دعا کرنے اور فریاد کرنے کو ترک نہ کرے۔ سنن ترمذی:3580

یہاں پر میں تفسیر ابن کثیر سے نقل کرونگی

"قتادہ رحمہ اللہ فرماتے ہیں لڑائی کے دوران یعنی جب تلوار چلتی ہو تب بھی اللہ تعالیٰ نے اپنا ذکر فرض رکھا ہے۔ عطا رحمتہ اللہ علیہ کا قول ہے کہ چپ رہنا اور ذکر اللہ کرنا لڑائی کے وقت بھی واجب ہے پھر آپ نے یہی آیت تلاوت فرمائی۔ تو جریج نے آپ سے دریافت کیا کہ اللہ تعالیٰ کی یاد بلند آواز سے کریں؟ آپ نے فرمایا ہاں کعب احبار فرماتے ہیں قرآن کریم کی تلاوت اور ذکر اللہ سے زیادہ محبوب اللہ کے نزدیک اور کوئی چیز نہیں۔

اس میں بھی اولیٰ وہ ہے جس کا حکم لوگوں کو نماز میں کیا گیا ہے اور جہاد میں کیا تم نہیں دیکھتے؟ کہ اللہ تبارک و تعالیٰ نے بوقت جہاد بھی اپنے ذکر کا حکم فرمایا ہے پھر آپ رحمہ اللہ نے یہی آیت پڑھی۔ "

تمام عبادات کی اصل ذکرِ الہٰی ہے اور ہر عبادت کسی نہ کسی صورت میں یادِ الہٰی کا ذریعہ ہے. کثرت ذکر محبت الہٰی کا اولین تقاضا ہے

سورہ نور میں اللہ تبارک وتعلیٰ فرماتےہیں رِجَالٌ لَا تُلْهِيهِمْ تِجَارَةٌ وَلَا بَيْعٌ عَنْ ذِكْرِ اللَّهِ وَإِقَامِ الصَّلَاةِ وَإِيتَاءِ الزَّكَاةِ يَخَافُونَ يَوْمًا تَتَقَلَّبُ فِيهِ الْقُلُوبُ وَالْأَبْصَارُ[37]

وہ بڑی شان والے مرد جنھیں اللہ کے ذکر سے اور نماز قائم کرنے اور زکوٰۃ دینے سے نہ کوئی تجارت غافل کرتی ہے اور نہ کوئی خرید و فروخت، وہ اس دن سے ڈرتے ہیں جس میں دل اور آنکھیں الٹ جائیں گی۔ [37]

سیدنا ابن مسعود رضی اللہ عنہ نے ایک مرتبہ تجارت پیشہ حضرات کو اذان سن کر اپنے کام کاج چھوڑ کر مسجد کی طرف جاتے ہوئے دیکھ کر یہی آیت تلاوت فرمائی اور فرمایا ”یہ لوگ انہی میں سے ہیں۔‏‏‏‏“ سیدنا ابن عمر رضی اللہ عنہ سے بھی یہی مروی ہے۔

اللہ تبارک وتعالیٰ اپنے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کو اور ایمان داروں کو حکم دے رہا ہے کہ وہ قرآن کریم کی تلاوت کرتے رہیں اور اسے اوروں کو بھی سنائیں


نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے کسی نے کہا: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم ! فلاں شخص نماز پڑھتا ہے لیکن چوری نہیں چھوڑتا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: عنقریب اس کی نماز اس کی یہ برائی چھڑا دے گی۔
[مسند احمد:447/2:صحیح]

‏‏‏‏ چونکہ نماز ذکر اللہ کا نام ہے اسی لیے اس کے بعد ہی فرمایا اللہ کی یاد بڑی چیز ہے اللہ تعالیٰ تمہاری تمام باتوں سے اور تمہارے کل کاموں سے باخبر ہے۔

لا الہ الا اللہ پڑھنے والوں پر نہ قبروں میں نہ قیامت میں کوئی وحشت ہوگی

قرآن میں اللہ فرماتا ہے فاذا قضیتم مناسککم فاذکرواللہ جب تم حج کے کام پورے کر چکے تو اللہ کا ذکر کرو
دوسری جگہ فرماتا ہے فَإِذَا قَضَيْتُمُ الصَّلَاةَ فَاذْكُرُوا اللَّهَ قِيَامًا وَقُعُودًا وَعَلَى جُنُوبِكُمْ پس جب تم نماز پوری کر چکو تو کھڑے بیٹھے اور سوئے اللہ کا ذکر کرو
اللہ تعالیٰحکم دیتا ہے کہ نماز خوف کے بعد اللہ کا ذکر بکثرت کیا کرو

اسی طرح اللہ تعالیٰ کو اپنی پیاری مخلوق حضرت انسان سے بہت محبت ہے، چنانچہ ازراہ محبت فرماتے ہیں :

فَاذۡكُرُوۡنِىۡٓ اَذۡكُرۡكُمۡ وَاشۡکُرُوۡا لِىۡ وَلَا تَكۡفُرُوۡنِ

سو تم مجھے یاد کرو۔ میں تمہیں یاد کیا کروں گا۔ اور میرے احسان مانتے رہنا اور ناشکری نہ کرنا
(سورۃ البقرۃ، جزآیت نمبر 152)

دنیا میں انسان اور جن کے آنے کا مقصد ہی اللہ کی یاد ہے کہ اللہ کا ذکر کرے
میری دعا ہے کہ اللہ ہمیں ان تمام نصیحتوں ہدایات اور احکامات پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے اور اللہ ہم سے راضی ہو
آمین

زنیرہ گل
 
Last edited:

Zunaira_Gul

*GUL*
TM Star
May 16, 2017
2,482
1,677
363
@Don @saviou @Shiraz-Khan @shehr-e-tanhayi @Hoorain @RedRose64
@Aaylaaaaa @minaahil @Umm-e-ahmad @H@!der @khalid_khan @Untamed-Heart
@duaabatool @Armaghankhan @zaryaab-irtiza @DiLkash @Seemab_khan @Mahen @Masha
@Cyra @Kavi @rooja @Aaidah @BeautyRose @Gaggan @hasandawar @AnadiL @Prince-Farry
@Hasii @Masha @Bird-Of-Paradise @Besharam @shzd @hinakhan0 @zehar @bilal_ishaq_786
@Belahadi @Manahi007 @BeautyRose @ujalaa @*Sonu* @Guriyaa_Ranee @illusionist
@sonu-unique @shahijutt @ujalaa @Layla @Fantasy @Babar-Azam @AM_ @Princess_Nisa
@Shanzykhan @sweet bhoot @NXXXS @IceCream @zahra1234 @AnadiL @Basitkikhushi
@Pari @whiteros @namaal @Abid Mahmood @Iceage-TM @Toobi @i love sahabah
@NamaL @Fa!th @MSC @yoursks @thefire1 @nighatnaseem21 @Fanii @naazii @Miss_Tittli
@junaid_ak47 @Guriya_Rani @Azeyy @Gul-e-lala @maryamtaqdeesmo @HorrorReturns
@shzd @p3arl @Atif-adi @Lost Passenger @marzish @Pakhtoon @candy @Asma_tufail
@Rubi @Tariq Saeed @Mas00m-DeVil @Wafa_Khan @amazingcreator @marib @Raat ki Rani
@Ghazal_Ka_Chiragh @Binte_Hawwa @sweet_c_kuri @sabha_khan40 @Masoom_girl @hariya
@Aayat @italianVirus @Ziddi_anGel @sabeha @attiya @Princess_E @Asheer @aira_roy
@shailina @maanu115 @Dua001 @pyaridua @xortica_ @DesiGirl @huny @AshirFrhan
@Rahath @Shireen @zonii @Noor_Afridi @sweet bhoot @Lightman @Noorjee @hafaz
@Bela @LuViSh @aribak @BabyDoll @Silent_tear_hurt @gulfishan @Manxil
@errorsss @diya. @isma33 @hashmi_jan @smarty_dollie @Era_Emaan
@saimaaaaaaa @Nighaat @crystal_eyez @Mantasha_Zawaar @zaatzarra @reality
@Hudx @Stunning_beauty @Zia_Hayderi @Fadiii @Aqsh_Arch @St0rm @ROHAAN @Pakhtun @Adeeha_
 

saviou

Manager
Aug 23, 2009
41,204
24,144
1,313
بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

السلام علیکم

محترمہ سیماب صاحبہ کی مشکور ہوں کہ انہوں نے فضائلِ ذکر پر لڑی بنانے
کا حکم صادر فرمایا موضوع تو کافی طویل ہے لیکن کوشش کرتی ہوں کہ مختصر کر کے پیش کروں

اللہ تبارک وتعالیٰ نے ذکر کی فضیلت و اہمیت اس طرح قرآن میں واضح کر دی ہے کہ سورہ عنکبوت میں فرمایا

" وَلَذِكۡرُ اللّٰهِ اَكۡبَرُ ‌ؕ "


ترجمہ : بیشک اللہ کا ذکر سب سے بڑا ہے

آقا ﷺ جب صحابہ کو دعوت و تبلیغ یا جہاد و قتال کی تلقین فرماتے وہیں پر ذکر و اذکار کی تلقین بھی فرمایا کرتے تھے
میدان جہاد میں بھی ذکر لازمی جز تھا
ارشاد خداوندی ہے


(يٰۤاَيُّهَا الَّذِيۡنَ اٰمَنُوۡۤا اِذَا لَقِيۡتُمۡ فِئَةً فَاثۡبُتُوۡا وَاذۡكُرُوا اللّٰهَ كَثِيۡرًا لَّعَلَّكُمۡ تُفۡلِحُوۡنَ‌ۚ‏ ( ۴۵...سُوۡرَةُ الاٴنفَال


اے ايمان والو! جب (دشمن کي) کسي فوج سے تمہارا مقابلہ ہو تو ثابت قدم رہا کرو اور اللہ کو کثرت سے ياد کيا کرو تاکہ تم فلاح پاجاؤ، ﴿۴۵

اللہ تعالیٰ کا ذکر اطمینانِ قلب اور راحت جاں کا سبب ہے

ذکر الہٰی یادِ الہٰی سے عبارت ہے ذکر الہٰی کا مفہوم یہ ہے کہ بندہ ہر وقت اور ہر حالت میں۔ اٹھتے بیٹھتے اور لیٹتے اپنے معبود حقیقی کو یاد رکھے اور اس کی یاد سے کبھی غافل نہ ہو۔

اب ایک حقیقت کی طرف آتی ہوں ذکر الہٰی ہر عبادت کی اصل ہے تمام جنوں اور انسانوں کی تخلیق کا مقصد عبادت الہٰی ہے اور تمام عبادات کا
مقصودِ اصلی یادِ الہٰی ہے کوئی عبادت اور کوئی نیکی اللہ تعالیٰ کے ذکر اور یاد سے خالی نہیں۔

نماز کو لیجیے نماز کا یہی مقصد ہے کہ اللہ تعالیٰ کے ذکر کو دوام حاصل ہو اور وہ ہمشہ جاری رہے
روزہ کو لیجیے روزے کا مقصد دل کو ذکر الہٰی کی طرف راغب کرنا ہے
تلاوت قرآن کو لیجیے قرآن حکیم پڑھنا افضل ہے کیونکہ یہ اللہ تعالیٰ کا کلام ہے اور سارے کا سارا اسی کے ذکر سے بھرا ہوا ہے، اس کی تلاوت
اللہ تعالیٰ کے ذکر کو تر و تازہ رکھتی ہے


ایک اور حدیث میں ہے کامل بندہ وہ ہے جو دشمن کے مقابلے کے وقت میرا ذکر کرتا رہے یعنی اس حال میں بھی میرے ذکر کو مجھ سے دعا کرنے اور فریاد کرنے کو ترک نہ کرے۔ سنن ترمذی:3580

یہاں پر میں تفسیر ابن کثیر سے نقل کرونگی

"قتادہ رحمہ اللہ فرماتے ہیں لڑائی کے دوران یعنی جب تلوار چلتی ہو تب بھی اللہ تعالیٰ نے اپنا ذکر فرض رکھا ہے۔ عطا رحمتہ اللہ علیہ کا قول ہے کہ چپ رہنا اور ذکر اللہ کرنا لڑائی کے وقت بھی واجب ہے پھر آپ نے یہی آیت تلاوت فرمائی۔ تو جریج نے آپ سے دریافت کیا کہ اللہ تعالیٰ کی یاد بلند آواز سے کریں؟ آپ نے فرمایا ہاں کعب احبار فرماتے ہیں قرآن کریم کی تلاوت اور ذکر اللہ سے زیادہ محبوب اللہ کے نزدیک اور کوئی چیز نہیں۔

اس میں بھی اولیٰ وہ ہے جس کا حکم لوگوں کو نماز میں کیا گیا ہے اور جہاد میں کیا تم نہیں دیکھتے؟ کہ اللہ تبارک و تعالیٰ نے بوقت جہاد بھی اپنے ذکر کا حکم فرمایا ہے پھر آپ رحمہ اللہ نے یہی آیت پڑھی۔ "

تمام عبادات کی اصل ذکرِ الہٰی ہے اور ہر عبادت کسی نہ کسی صورت میں یادِ الہٰی کا ذریعہ ہے. کثرت ذکر محبت الہٰی کا اولین تقاضا ہے

سورہ نور میں اللہ تبارک وتعلیٰ فرماتےہیں رِجَالٌ لَا تُلْهِيهِمْ تِجَارَةٌ وَلَا بَيْعٌ عَنْ ذِكْرِ اللَّهِ وَإِقَامِ الصَّلَاةِ وَإِيتَاءِ الزَّكَاةِ يَخَافُونَ يَوْمًا تَتَقَلَّبُ فِيهِ الْقُلُوبُ وَالْأَبْصَارُ[37]

وہ بڑی شان والے مرد جنھیں اللہ کے ذکر سے اور نماز قائم کرنے اور زکوٰۃ دینے سے نہ کوئی تجارت غافل کرتی ہے اور نہ کوئی خرید و فروخت، وہ اس دن سے ڈرتے ہیں جس میں دل اور آنکھیں الٹ جائیں گی۔ [37]

سیدنا ابن مسعود رضی اللہ عنہ نے ایک مرتبہ تجارت پیشہ حضرات کو اذان سن کر اپنے کام کاج چھوڑ کر مسجد کی طرف جاتے ہوئے دیکھ کر یہی آیت تلاوت فرمائی اور فرمایا ”یہ لوگ انہی میں سے ہیں۔‏‏‏‏“ سیدنا ابن عمر رضی اللہ عنہ سے بھی یہی مروی ہے۔

اللہ تبارک وتعالیٰ اپنے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کو اور ایمان داروں کو حکم دے رہا ہے کہ وہ قرآن کریم کی تلاوت کرتے رہیں اور اسے اوروں کو بھی سنائیں


نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے کسی نے کہا: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم ! فلاں شخص نماز پڑھتا ہے لیکن چوری نہیں چھوڑتا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: عنقریب اس کی نماز اس کی یہ برائی چھڑا دے گی۔
[مسند احمد:447/2:صحیح]

‏‏‏‏ چونکہ نماز ذکر اللہ کا نام ہے اسی لیے اس کے بعد ہی فرمایا اللہ کی یاد بڑی چیز ہے اللہ تعالیٰ تمہاری تمام باتوں سے اور تمہارے کل کاموں سے باخبر ہے۔

لا الہ الا اللہ پڑھنے والوں پر نہ قبروں میں نہ قیامت میں کوئی وحشت ہوگی

قرآن میں اللہ فرماتا ہے فاذا قضیتم مناسککم فاذکرواللہ جب تم حج کے کام پورے کر چکے تو اللہ کا ذکر کرو
دوسری جگہ فرماتا ہے فَإِذَا قَضَيْتُمُ الصَّلَاةَ فَاذْكُرُوا اللَّهَ قِيَامًا وَقُعُودًا وَعَلَى جُنُوبِكُمْ پس جب تم نماز پوری کر چکو تو کھڑے بیٹھے اور سوئے اللہ کا ذکر کرو
اللہ تعالیٰحکم دیتا ہے کہ نماز خوف کے بعد اللہ کا ذکر بکثرت کیا کرو

اسی طرح اللہ تعالیٰ کو اپنی پیاری مخلوق حضرت انسان سے بہت محبت ہے، چنانچہ ازراہ محبت فرماتے ہیں :

فَاذۡكُرُوۡنِىۡٓ اَذۡكُرۡكُمۡ وَاشۡکُرُوۡا لِىۡ وَلَا تَكۡفُرُوۡنِ

سو تم مجھے یاد کرو۔ میں تمہیں یاد کیا کروں گا۔ اور میرے احسان مانتے رہنا اور ناشکری نہ کرنا
(سورۃ البقرۃ، جزآیت نمبر 152)

دنیا میں انسان اور جن کے آنے کا مقصد ہی اللہ کی یاد ہے کہ اللہ کا ذکر کرے
میری دعا ہے کہ اللہ ہمیں ان تمام نصیحتوں ہدایات اور احکامات پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے اور اللہ ہم سے راضی ہو
آمین

زنیرہ گل
Wa Alaykum Assalam
Jazak Allah Khairan
 
  • Like
Reactions: Zunaira_Gul
Top
Forgot your password?