مریخ پر زندگی دریافت ہو چکی ؟

intelligent086

Super Star
Nov 10, 2010
8,607
8,598
1,313
Lahore,Pakistan

مریخ پر زندگی دریافت ہو چکی ؟
117081

ایم وکٹر
ایک سادہ سے سوال کی تلاش کے لیے انسانوں نے دہائیاں صرف کیں اور اربوں ڈالرز خرچ کرڈالے اور وہ سوال ہے، کیا مریخ پر زندگی ہے؟ ماضی میں ناسا سے منسلک رہنے والے سائنس دان گلبرٹ لیون کے مطابق 1976ء میں مریخ جانے والے ناسا کے وائیکنگ مشن کے تجربات سے ہم غالباً پہلے سے جانتے ہیں کہ اس کائنات میں ہم اکیلے نہیں۔اس رائے کا اظہارانہوں نے جریدہ ’’سائنٹیفک امریکن‘‘ میں شائع ہونے والی ایک تحریر میں کیا ہے۔ ناسا نے مدار میں گھومنے والے دو مختلف ’’وائیکنگ‘‘ مصنوعی سیارے اورخلائی گاڑیاںیا لینڈرزمریخ بھیجی تھیں۔ ان کا مقصد تجربات کرنااور تصاویر بھیجنا تھا۔ اس کے نتیجے میں امریکا نے پہلی بار کامیابی سے خلائی گاڑی کو مریخ پر اتارا اور اس نے تصاویر بھی بھیجیں۔ لیون کے مطابق مشن سے زندگی کی نشاندہی کے تجربات کے مثبت نتائج برآمد ہوئے۔ تجربے کے دوران لینڈر نے مریخ کی مٹی کے نمونے کو نائٹروجن پر مبنی غذا بخش محلول میں ڈالا۔ خیال یہ تھا کہ اگر اس میں خوردبینی جاندار غذا کو نظام انہضام کا حصہ بنائیں گے تو اس سے تابکار کاربن ڈائی آکسائیڈ گیس پیدا ہو گی۔ لیون کے مطابق خوردبینی جانداروں کے تجربے کے مثبت نتائج حیران کن تھے۔ 4000 میل دور پہنچنے والے ایک اور لینڈر سے بھی یہی نتائج نکلے۔ لیکن مسئلہ یہ ہے کہ ناسا کے مطابق مزید تجربات میں، جہاں لینڈر اترے، خوردبینی جانداروں کی موجودگی کے واضح ثبوت نہ ملے۔ لیون اپنے نتائج کو ثبوتوں کے ساتھ پیش کرتے ہیں جو ناسا کے وائیکنگ مشن سے حاصل ہوئے، ان میں پانی، میتھین، امونیا اور یہاں تک کہ ’’کیڑے نما‘‘ چیزیں ناسا کے کیوراسٹی رووَر سے لی گئی تصاویر میں ظاہر ہوئی تھیں۔ لیون کے مطابق اس کے باوجود ناسا پیچھے ہٹتا گیا۔ اس کے مطابق زندگی کے ثبوتوں کے لیے 1976ء کے مشن کے بعد کھوج میں ناسا کو ناکامیاں ہوئیں حالانکہ یہ اس کی اولین ترجیحات میں سے تھی۔ ناسا کا مریخ 2020ء رووَر وہاں کی مٹی کے نمونے زمین پر لائے گا۔لیون کا خیال ہے سائنس دانوں کو 1970ء کی دہائی جیسے مزید تجربات کرنے چاہئیں لیکن اس کے لیے ضروری ہے کہ لیون ناسا کو پہلے راضی کریں۔ بشکریہ ’’فیوچرازم‘‘
 
  • Like
Reactions: maria_1
Top
Forgot your password?