کامیاب زندگی کے 50 اصول، تحریر : پرفیسر ضیا ء زرناب

intelligent086

TM Star
Nov 10, 2010
1,822
1,735
1,313
Lahore,Pakistan
کامیاب زندگی کے 50 اصول، تحریر : پرفیسر ضیا ء زرناب


اس دنیا میں کامیابی دراصل انسان کی شعوری کاوشوں اور کوششوں کا نتیجہ ہوتی ہے جس میں فرد ایک واضح مقصد کے حصول کے لئے یکسو ہو کر جدو جہد کرتا ہے اور مستقل مزاجی اور بھرپورمحنت سے اپنی منزل تک پہنچ کر ہی دم لیتاہے۔ اِس عمل اُسے مسلسل راہنمائی اور مشاورت کی ضرورت پڑتی ہے تاکہ وُہ اپنے سفر کو نہ صرف جاری رکھ سکے بلکہ اس سفر سے بھرپور لطف اندوز ہو سکے ۔ فرد اگر اپنے آپ کو زندگی میں ترقی کی سات(7) جہتوں اور پہلوئوں میں یکساں طور پر نشوونما دے گا تو ہی اُسے کامیاب مانا جاتا ہے ۔اسلئے ذیل میں کامیابی کے پچاس50 اصول بیان کئے جارہے ہیں جن پر عمل کر کے انسان کو زندگی کی تمام جہتوں اور پہلوئوں میں کامیابی حاصل کر سکتا ہے ۔

اپنی ذات پر اپنی جاب سے زیادہ توجہ دو کیونکہ جاب سے روٹی کمائی جاتی ہے اور ذات میں ترقی سے مقدر بنایا جاسکتا ہے: جم رون

۔:1ذاتی ترقی۔: Personal Development۔

۔:1اپنی ذات پر سرمایہ کاری کریں:اپنے ظاہر اور باطن دونوں پر دل کھول کر خرچ کریں اور یہ مت بھولیں کہ یہ خرچہ نہیں بلکہ سرمایہ کاری ہے یعنی یہ تگنا چوگنا ہو کر واپس آئے گا۔اپنی ظاہری وضع قطع اور لباس پربھرپور توجہ دیں ۔اسی طرح اپنی اندرون یعنی شخصیت ، ذہانت اور روح پر بھی سرمایہ کاری کریںاور اپنی ذات کی ترقی کے سیمینار؍ورکشاپس؍ٹریننگ پروگرامز میں بھرپور شرکت کریں۔
۔:2 اپنی ذات کو جانیں :اپنی خوبیوں اور خامیوں کو جان کر خوبیوں کو مزید بہتر بنائیں اور خامیوں میں کمی لائیں ۔اپنی ذات کے علم کو دنیا کا سب سے اعلیٰ ترین علم مانا جاتا ہے کیونکہ اس کی بدولت ہی آپ انسان سے اعلیٰ انسان کا سفر طے کرتے ہیں۔ جم رون نے کیاخوبصورت بات کہی ہے کہ اپنی ذات پر اپنی جاب سے زیادہ توجہ دو کیونکہ جاب سے روٹی کمائی جاتی ہے اور اپنی ذات میں ترقی سے مقدر بنایا جاسکتا ہے۔

۔:3 نرم دل مگر سخت جان بنیں :اپنے آپ کو نرم دل رکھیں مگر کسی بھی کام کو مکمل کرنے میںاستقامت اور مستقل مزاجی کا مظاہرہ کریں کیونکہ اس سے ہی آپ کی اپنے دل اور سماج کی نظروں میں عزت بنتی ہے۔

۔:4اپنی ذات پر بھروسہ رکھیں: کامیابی کا سفر اپنے ذات پر مکمل یقین اور بھروسے سے شروع ہوکر اس پر ختم ہو جاتا ہے۔ اس لئے خودی کو بلند رکھیں مگر خود پسندی سے بچ کر رہیں۔دنیا کو منوانے سے پہلے اپنی ذات کو کامیابی کا یقین دلوانا لازمی ہوتا ہے۔ کیونکہ یہیں سے کامیابی کا آغاز ہوتا ہے ۔

۔:5مقصد کے حصول کیلئے منصوبہ بندی کریں:زندگی میں بڑے مقاصد نہ ہوں تو یہ بے معنی سفر کے علاوہ کچھ نہیں ہے۔فرد اور قوم کو جیتے جی مارنا ہو تو صرف مقصد کو ختم کر دیں ۔ اگر ان مقاصد کے حصول کے لئے آپ کے پاس مناسب منصوبہ بندی اور حکمتِ عملی نہیں ہے تو یہ یقین کر لیں کہ یہ دیوانے کا خواب تو ہو سکتا ہے مگر کسی کامیاب فرد کی زندگی کا سامان نہیں۔

۔:6اپنے خواب بڑے اور سوچ مثبت رکھیں: مثبت سوچیں زندگی کو مثبت رُخ دیتی ہیں جن پر چل کے فرد بڑے بڑے خواب پورے کر سکتا ہے۔ خواب پورے کیلئے سونے کا نہیں جاگتی آنکھوں سے بھرپورمحنت کرنا ہوتی ہے۔ اس لئے منفی سوچوں اور لوگوں سے بچیں جو خوابوں، ہمتوں، جوش اور جذبوں کو قتل کردیتے ہیں اور کسی کو خبر بھی نہیں ہوتی۔

۔:7حقیقی فرد بنیں: مصنوعی رویے اور لوگ زندگی کے سفر میں زیادہ عرصے تک ساتھ نہیں چل سکتے اس لئے اِن سے بچیں جیسے کہ آپ ایک جینوئن فرد کے طور جانے اور پہچانے جائیں۔ اپنی ذات اور شخصیت کی شناخت کو مصنوعی پن کے شائبے سے بھی بچائیں ۔

۔:2جسمانی ترقی: Physical Development

۔:8اپنے جسم کی حفاظت کریں:جسم وُہ سرائے یعنی عارضی قیام گاہ ہے جس میں خدا کی پھونکی ہوئی روح کا دنیاوی زندگی کے لئے قیام ہے۔ اس کی حفاظت اللہ کی امانت سمجھ کر کریں کیونکہ اگر یہ تکلیف یا بیماری میں ہو گا تو دنیا کی بڑی سے بڑی کامیابی کا لطف ادھورا اور نامکمل ہو گا۔

۔:9متوازن خوراک کھائیں: پیسے اچھی خوراک پر خرچ کرنا ہیں یا دوائوں پر فیصلہ آپ کا ہے۔ آپ کی خوراک متوازن ہونی چاہیے جس میں تمام غذائی اجزاء شامل ہوں تاکہ آپ بھرپور اور صحتمند زندگی کا مزہ لے سکیں۔مہنگے پھل اور سبزیاں ڈاکٹروں اور ہسپتالوں کی فیسوں سے زیادہ بہتر ہیں ۔کیونکہ یہ صحت مند رکھنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

۔:10جسمانی طور پر مضبوط اور توانا رہیں: ورزش دنیا کی سب سے بہترین دوائی ہے۔اپنا سٹیمنا یعنی قوت ِ برداشت کو آہستہ آہستہ بڑھائیں تاکہ آپ اپنے دل و دماغ کی حفاظت کر سکیں ۔

۔:11آرام کریں: اپنے جسم کو آرام دیں تاکہ دوبارہ تازہ دم ہو کر زندگی کی جنگ لڑ سکیں۔ نیند خدا کے بڑے عطیات اور نعمتوں میں سے ایک ہے ۔اس کی حفاظت کریں اور کم از کم 7سے8گھنٹے آرام کریں تاکہ آپ جسمانی اور نفسیاتی بیماریوں سے بچ سکیں ۔

۔:12اپنی قوت مدافعت بڑھائیں: زندگی میں اپنی متوازن خوراک اور ورزش کی مدد دے اپنی قوتِ مدافعت بڑھائیں تاکہ بیماریوں سے بچ سکیں ۔

۔:13صفائی پرپورا ایمان رکھیں :ہر وقت اپنے جسم اور روح کو پاکیزہ اور صاف رکھیں تاکہ لوگ آپ کے ساتھاور رفاقت پر فخر محسوس کریں۔

۔:14اپنے آپ کو وقت دیں: دنیا کی سب سے بڑی دولت وقت ہے۔ اس کی قدر کریں اور یہ تحفہ سب سے پہلے اپنے آپ کو دیں تاکہ آپ جسمانی اور روحانی طور پر صحتمند اور توانا رہ سکیں۔اپنی ذات میں بہتری میں گذارا گیا وقت ہی فرد کی اصل دولت ہوتا ہے ۔ کامیاب لوگ اپنے ساتھ یعنی اکیلے وقت گذارنا پسند کرتے ہیں کیونکہ اس میں فرد کا تدبر و تفکر اپنے عروج پر ہوتا ہے۔

۔:3معاشی؍مالی ترقی: Financial Development

۔:15سب سے پہلے اپنے آپ کوادائیگی کریں: آپ کی ذات کا حق سب سے مقدم رکھیں اور اپنی کمائی کا کم از کم 8سے10فیصد حصہ اپنی ذات پر خرچ کر کے اس سے تسکین اور افادہ ضرور حاصل کریں۔

۔:16اپنے خرچ پر نظر رکھیں:دنیا میں آمدنی بڑھانے سے نہیں بلکہ خرچ پر قابو پانے سے فرد کا جیون سُکھی ہوتا ہے۔

۔:17بچت کو اپنا شعار بنالیں: اپنی آمدنی کا کم ازکم 10فیصد حصہ بچائیں ورنہ آج کل کے دور میں آپ کو معاشی بدحالی اور پریشانی سے آپ کو کوئی نہیں بچا سکتا۔

۔:18اثاثے بڑھائیں اور خرچے کو گٹھائیں:آمدن بڑھے تو ایسی چیزوں پر خرچ کریں جن میں سے آپ کو آمدن ہو ناکہ آپ نئے خرچے پال لیں۔فضول خرچی کی بجائے سرمایہ کاری کریں۔

۔:19تنخواہ نہیں منافع پر توجہ دیں:کاروبار کو دنیا میں موجود رزق کا 90فیصد دیا گیا ہے۔ تنخواہوں سے کبھی کوئی امیر نہیں ہوا ۔ تنخواہ میں سے بھی کچھ بچا کر سرمایہ کاری کریں جب اس سے آپ کو منافع ملنا شروع ہو گا تو سوچ خودبخود بدلے گی۔

۔:20

آمدن کبھی سوچ سے زیادہ نہیں ہوتی: اپنی آمدن بڑھانے کے لئے سب سے پہلے اپنے سوچ کو بڑا کریں کیونکہ آمدنی کبھی سوچ سے بڑی نہیں ہوتی۔ :21رابطوں سے رزق کمائیے: دوسروں کی ساتھ پُر خلوص رابطے رکھیں اور دوستوں سے رابطے کبھی نہ ٹوٹنے دیں یہ آپ کا اصل سرمایہ ہیں۔

۔:4سماجی ترقی: Social Development

۔:22دوسروںکے معاملات میں حقیقی دلچسپی لیں:دوسروں کے ساتھ برتائو میں کوئی بھی مصنوعی رویہ، سوچ یا عمل آپکو دوسروں کی نظروں میں گرا دیتا ہے۔ اس لئے دوسروں کے معاملات میں جینوئن طور پر یعنی دل سے دلچسپی لیں۔

۔:23دوسروں کوتکریم دیں: جس عزت کے آپ دوسروں سے آپ طلبگار ہیں پہلے دوسروں کو دیں۔ دوسروں سے محبت کا اظہار ان کے عزت کر کے کریں تاکہ آپ کو لفظوں اور عمل میں یکسانیت ہو جو فرد کو حقیقی عزت دلاتی ہے۔

۔:24دوسروں کی مدد کرکے اپنی کامیابی کو یقینی بنائیں: آپ دوسروں کی جتنا زیادہ مدد کرتے ہیں آپ کی کامیابی کا درجہ یعنی لیول اُتنا ہی بڑھتا چلا جاتا ہے۔ دوسروں کو وُہ دیں جو اُن کو آپ سے درکار ہے اور بدلے میں وُہ پائیں جو آپ اُن سے چاہ رہے ہیں۔

۔:25دوسروں سے رویے لچکدار رکھیں: جامد رویے تعلقات کو مار دیتے ہیں اس لئے تعلقات بناتے ہوئے رویوں کو لچکدار رکھیں تاکہ دوسرے آپ سے ملنا پسند کریں ۔

۔:26دوسروں کو برادشت نہیں قبول کریں: دوسروں کو برداشت نہیں قبول کرنا سیکھیں کیونکہ تنوع اور اختلاف خدا کو پسند ہے اسی لئے تو ہم الگ الگ ہیں ورنہ خدا سب کو ایک جیسا بنا دیتا۔

۔:27دوسروںکی سنیں : پہلے دوسروں کی سُنیں پھر اپنی سنائیں۔ بولیں کم اور سُنیں زیادہ۔اس سے آپکی ہر دلعزیزی میں اضافہ یقینی ہے۔

۔:28دوسروں سے ملتے رہیں: فیس بک، ٹویٹر اور لنکڈ ان پر دوست بنانے اور بڑھانے کی بجائے حقیقی زندگی میں مُخلص دوستوں کی تعداد بڑھائیں جو آپ کا اصل سرمایہ ہیں۔

۔:5روحانی ترقی: Spirtual Development

۔:۔29

ہر کام کرتے ہوئے نیت نیک رکھیں: کسی بھی کام کو شروع کرتے ہوئے اپنی نیت کی پاکیزگی کا اہتمام کریں تاکہ منزلیں اور مُرادیں پانا آسان ہو جائے۔ :۔
۔30کامل ایمان و یقین کی زندگی جینا شروع کردیں: خدا پر کامل ایمان اور بھروسہ فرد کو بہت سی جسمانی اور نفسیاتی بیماریوں سے بچاتا ہے اور فرد کی ضرورت بھی ہے اس لئے اللہ پر مکمل یقین اور بھروسے کی زندگی گزاریں ۔

۔:31شکر گذاری سے رزق میں اضافہ کریں: عطا پر شکر کریں اور چھن جانے پر صبر کریں۔ اس عمل سے نعمتوں میں اضافی کر دیا جاتا ہے اور حزن و ملال میں کمی آتی ہے۔

۔:32مانگیں تاکہ آپ کو عطا کر دیا جائے:خدا سے مانگیں ، آپ کو عطا کر دیا جائے گا کیونکہ مانگنے والوں کو کبھی محروم نہیں رکھا جاتا مگر اخلاص اور عضز شرط ہے۔

۔:33اپنے آپ اور دوسروں کو معاف کرنا سیکھیں:اپنی اور دوسروں کی غلطیوں سے سیکھیں اورمعاف کر کے آگے بڑھ جائیں ۔ورنہ ذہنی عذاب اور بے سکونی کے لئے تیار ہو جائیں۔

۔:34دینے میں پائیں: دنیا میں جو بھی چیز آپ کو چاہیے وُہ علم ہو یا دولت ، سکون ہو یا رزق ،بس باٹنا شروع کردیں آپ کی جھولی سب سے پہلے بھر دی جائے گی۔

۔:35توازن قائم کریں:زندگی کے ہر شعبے اور جہت میں توازن لائیں کیونکہ توازن ہی دنیا کی سب سے بڑی خوبصورتی اور خیر ہے ۔

۔:6علمی ترقی: Intellectual Development

۔:36کتاب سے محبت کریں:کتاب سے دوستی نہیں محبت کریں یہ کبھی آپ کو مایوس نہیں کرے گی اور ان کی سنگت میں گذارا ہو وقت بھی کبھی ضائع نہیں ہوتا۔ اول تو ہفتے میں ایک کتاب نہیں تو مہینے میں ایک کتاب ضرور پڑھیں۔

۔:37اچھی باتیں پڑھنے سے زیادہ جینا زیادہ شروع کردیں:ایک ہزار اقوالِ زریں پڑھنے سے ایک لاکھ درجے بہتر ہے کہ آپ ایک قول کو جینا شروع کردیں یہی تو خیر و برکت کا سر چشمہ ہے۔

۔:38ہر روز کچھ نیا سیکھیں: سیکھنے کی کوئی عمر نہیں اس لئے آج سے ہی ہر روز کچھ نیا کریں اور کچھ نیا سیکھیں چاہے اس کیے لئے آپ کو کچھ بھلانا ہی کیوں نہ پڑے ۔

۔:39معلومات کی بجائے علم میں اضافہ کریں: کچھ جان لینا اُس وقت تک آپ کے لئے خیر نہیں ہے جب تک وُہ عملی زندگی میں علم کا روپ دھار کر کچھ فائد ہ نہیں دیتا۔ اس لئے صرف معلومات نہ بڑھائیں بلکہ علم میں اضافہ کریں

۔:40صرف مستند علم پر بھروسہ کریں:آپ کو ملنے والی ہر معلومات درست نہیں ہو سکتی اس لئے تحقیق کرنا سیکھیں اور صرف ان معلومات پر ہی بھروسی کریں جو مستند اور قابل ِ تصدیق ہوں۔

۔:41ٹی وی نہیں یو ٹیوب پر اپنا وقت گذاریں: ٹی وی پر فضول وقت گذارنے کی بجائے یو ٹیوب پر معیاری اور مستند مواد دیکھیں جو آپ کے علم و ہنر میں اضافہ کر سکے۔

۔:42سیکھنے کے بعد سکھانے کو اپنی زندگی کا مشن بنالیں: کسی بھی سیکھی ہوئی بات کو اپنی ذات کا مستقل حصہ بنانے کے لئے اسے دوسروں کو سکھائیں یہ آپ کے علم کا صدقہ بھی ہے اور اسے مستقل بنانے کا ناگزیر طریقہ بھی۔

۔:7پیشہ وارانہ ترقی: Professional Development

۔:43مان لیں رزق ڈگریوں اور نمبروں سے مشروط نہیں:بڑی کامیابی حاصل کرنے کیلئے فرد کی مسلسل جدوجہد ، مستقل مزاجی اور استقامت کا کردار کسی بھی ڈگری یا نمبروں سے زیادہ ہے۔ اس لئے ان صفات کو حاصل کرنے میں گولڈ میڈل اور اے گریڈ حاصل کریں جو کامیابی کی ضمانت ہے۔

۔:44مصروفیت نہیں نتائج پر توجہ دیں:کاموں میں مصروف نظر آنے کی بجائے کاموں کے نتائج لانے کی کوشش کریں کیونکہ آج کی دنیا میں نتائج کا سکہ سب سے زیادہ چلتا ہے۔

۔:45کام شروع کر کے مکمل کرنے والے بنیں:کام کو مکمل کرنے والوں کو ہی آج کی دنیا میں زیادہ مقام و مرتبہ دیا جاتا ہے۔ اچھے طور پر کاموں کو اختتام تک لانے والے بنیں جو کامیابیوں کی ضمانت ہے۔

۔:46کاموں میں تاخیر نہیں بلکہ فیصلے کریں: جلد فیصلے کرنے کی عادت ڈالیں چاہے اس میں غلطی ہی ہو جائے کیونکہ غلطی سے سیکھ کر آگے بڑھا جا سکتا ہے مگر کوئی بھی فیصلہ نہ کرنے سے سب کچھ رُک جاتا ہے۔

۔:47کاموں اور چیزوں کو سادہ رکھیں: مشکل سے بچ کر چلنا اور آسان اور سادہ رکھنا دنیا کے مشکل ترین کاموں میں سے ایک ہے۔ اسے اپنی زندگی کے ہر پہلو میں مقدم رکھیں ۔

۔:48مسائل نہیں حل پر توجہ دیں : مثالی یعنی آئیڈیل نہیںپریکٹیکل یعنی عملی اقدامات سے ہی کامیابی کی منزل ملا کرتی ہے۔ اس کے لئے لازم ہے کہ مسائل کی بجائے ان کے حل پر زیادہ توجہ دی جائے ۔

:49تبدیلی کوقبول کریں : ہر روز کچھ نیا سیکھیںتاکہ بدلتے وقت کے تقاضوں سے ہم آہنگ ہو کر نئے نئے چیلنجز کا مقابلہ کر سکیں۔ کیونکہ دنیا میں صرف تبدیلی ہے مستقل ہے۔

۔:50 فوری عمل کرنا شرو ع کریں:لاکھوں من گفتگو سے ایک تولہ عمل بہتر ہوتا ہے اس لئے آج سے عمل کی دنیا میں قدم رکھیں اور سوچ بچار سے نکل کر عمل سے زندگی کو شاندار بنائیں۔
 
  • Like
Reactions: maria_1

maria_1

Senior Member
Jul 7, 2019
672
580
93
کامیاب زندگی کے 50 اصول، تحریر : پرفیسر ضیا ء زرناب


اس دنیا میں کامیابی دراصل انسان کی شعوری کاوشوں اور کوششوں کا نتیجہ ہوتی ہے جس میں فرد ایک واضح مقصد کے حصول کے لئے یکسو ہو کر جدو جہد کرتا ہے اور مستقل مزاجی اور بھرپورمحنت سے اپنی منزل تک پہنچ کر ہی دم لیتاہے۔ اِس عمل اُسے مسلسل راہنمائی اور مشاورت کی ضرورت پڑتی ہے تاکہ وُہ اپنے سفر کو نہ صرف جاری رکھ سکے بلکہ اس سفر سے بھرپور لطف اندوز ہو سکے ۔ فرد اگر اپنے آپ کو زندگی میں ترقی کی سات(7) جہتوں اور پہلوئوں میں یکساں طور پر نشوونما دے گا تو ہی اُسے کامیاب مانا جاتا ہے ۔اسلئے ذیل میں کامیابی کے پچاس50 اصول بیان کئے جارہے ہیں جن پر عمل کر کے انسان کو زندگی کی تمام جہتوں اور پہلوئوں میں کامیابی حاصل کر سکتا ہے ۔

اپنی ذات پر اپنی جاب سے زیادہ توجہ دو کیونکہ جاب سے روٹی کمائی جاتی ہے اور ذات میں ترقی سے مقدر بنایا جاسکتا ہے: جم رون

۔:1ذاتی ترقی۔: Personal Development۔

۔:1اپنی ذات پر سرمایہ کاری کریں:اپنے ظاہر اور باطن دونوں پر دل کھول کر خرچ کریں اور یہ مت بھولیں کہ یہ خرچہ نہیں بلکہ سرمایہ کاری ہے یعنی یہ تگنا چوگنا ہو کر واپس آئے گا۔اپنی ظاہری وضع قطع اور لباس پربھرپور توجہ دیں ۔اسی طرح اپنی اندرون یعنی شخصیت ، ذہانت اور روح پر بھی سرمایہ کاری کریںاور اپنی ذات کی ترقی کے سیمینار؍ورکشاپس؍ٹریننگ پروگرامز میں بھرپور شرکت کریں۔
۔:2 اپنی ذات کو جانیں :اپنی خوبیوں اور خامیوں کو جان کر خوبیوں کو مزید بہتر بنائیں اور خامیوں میں کمی لائیں ۔اپنی ذات کے علم کو دنیا کا سب سے اعلیٰ ترین علم مانا جاتا ہے کیونکہ اس کی بدولت ہی آپ انسان سے اعلیٰ انسان کا سفر طے کرتے ہیں۔ جم رون نے کیاخوبصورت بات کہی ہے کہ اپنی ذات پر اپنی جاب سے زیادہ توجہ دو کیونکہ جاب سے روٹی کمائی جاتی ہے اور اپنی ذات میں ترقی سے مقدر بنایا جاسکتا ہے۔

۔:3 نرم دل مگر سخت جان بنیں :اپنے آپ کو نرم دل رکھیں مگر کسی بھی کام کو مکمل کرنے میںاستقامت اور مستقل مزاجی کا مظاہرہ کریں کیونکہ اس سے ہی آپ کی اپنے دل اور سماج کی نظروں میں عزت بنتی ہے۔

۔:4اپنی ذات پر بھروسہ رکھیں: کامیابی کا سفر اپنے ذات پر مکمل یقین اور بھروسے سے شروع ہوکر اس پر ختم ہو جاتا ہے۔ اس لئے خودی کو بلند رکھیں مگر خود پسندی سے بچ کر رہیں۔دنیا کو منوانے سے پہلے اپنی ذات کو کامیابی کا یقین دلوانا لازمی ہوتا ہے۔ کیونکہ یہیں سے کامیابی کا آغاز ہوتا ہے ۔

۔:5مقصد کے حصول کیلئے منصوبہ بندی کریں:زندگی میں بڑے مقاصد نہ ہوں تو یہ بے معنی سفر کے علاوہ کچھ نہیں ہے۔فرد اور قوم کو جیتے جی مارنا ہو تو صرف مقصد کو ختم کر دیں ۔ اگر ان مقاصد کے حصول کے لئے آپ کے پاس مناسب منصوبہ بندی اور حکمتِ عملی نہیں ہے تو یہ یقین کر لیں کہ یہ دیوانے کا خواب تو ہو سکتا ہے مگر کسی کامیاب فرد کی زندگی کا سامان نہیں۔

۔:6اپنے خواب بڑے اور سوچ مثبت رکھیں: مثبت سوچیں زندگی کو مثبت رُخ دیتی ہیں جن پر چل کے فرد بڑے بڑے خواب پورے کر سکتا ہے۔ خواب پورے کیلئے سونے کا نہیں جاگتی آنکھوں سے بھرپورمحنت کرنا ہوتی ہے۔ اس لئے منفی سوچوں اور لوگوں سے بچیں جو خوابوں، ہمتوں، جوش اور جذبوں کو قتل کردیتے ہیں اور کسی کو خبر بھی نہیں ہوتی۔

۔:7حقیقی فرد بنیں: مصنوعی رویے اور لوگ زندگی کے سفر میں زیادہ عرصے تک ساتھ نہیں چل سکتے اس لئے اِن سے بچیں جیسے کہ آپ ایک جینوئن فرد کے طور جانے اور پہچانے جائیں۔ اپنی ذات اور شخصیت کی شناخت کو مصنوعی پن کے شائبے سے بھی بچائیں ۔

۔:2جسمانی ترقی: Physical Development

۔:8اپنے جسم کی حفاظت کریں:جسم وُہ سرائے یعنی عارضی قیام گاہ ہے جس میں خدا کی پھونکی ہوئی روح کا دنیاوی زندگی کے لئے قیام ہے۔ اس کی حفاظت اللہ کی امانت سمجھ کر کریں کیونکہ اگر یہ تکلیف یا بیماری میں ہو گا تو دنیا کی بڑی سے بڑی کامیابی کا لطف ادھورا اور نامکمل ہو گا۔

۔:9متوازن خوراک کھائیں: پیسے اچھی خوراک پر خرچ کرنا ہیں یا دوائوں پر فیصلہ آپ کا ہے۔ آپ کی خوراک متوازن ہونی چاہیے جس میں تمام غذائی اجزاء شامل ہوں تاکہ آپ بھرپور اور صحتمند زندگی کا مزہ لے سکیں۔مہنگے پھل اور سبزیاں ڈاکٹروں اور ہسپتالوں کی فیسوں سے زیادہ بہتر ہیں ۔کیونکہ یہ صحت مند رکھنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

۔:10جسمانی طور پر مضبوط اور توانا رہیں: ورزش دنیا کی سب سے بہترین دوائی ہے۔اپنا سٹیمنا یعنی قوت ِ برداشت کو آہستہ آہستہ بڑھائیں تاکہ آپ اپنے دل و دماغ کی حفاظت کر سکیں ۔

۔:11آرام کریں: اپنے جسم کو آرام دیں تاکہ دوبارہ تازہ دم ہو کر زندگی کی جنگ لڑ سکیں۔ نیند خدا کے بڑے عطیات اور نعمتوں میں سے ایک ہے ۔اس کی حفاظت کریں اور کم از کم 7سے8گھنٹے آرام کریں تاکہ آپ جسمانی اور نفسیاتی بیماریوں سے بچ سکیں ۔

۔:12اپنی قوت مدافعت بڑھائیں: زندگی میں اپنی متوازن خوراک اور ورزش کی مدد دے اپنی قوتِ مدافعت بڑھائیں تاکہ بیماریوں سے بچ سکیں ۔

۔:13صفائی پرپورا ایمان رکھیں :ہر وقت اپنے جسم اور روح کو پاکیزہ اور صاف رکھیں تاکہ لوگ آپ کے ساتھاور رفاقت پر فخر محسوس کریں۔

۔:14اپنے آپ کو وقت دیں: دنیا کی سب سے بڑی دولت وقت ہے۔ اس کی قدر کریں اور یہ تحفہ سب سے پہلے اپنے آپ کو دیں تاکہ آپ جسمانی اور روحانی طور پر صحتمند اور توانا رہ سکیں۔اپنی ذات میں بہتری میں گذارا گیا وقت ہی فرد کی اصل دولت ہوتا ہے ۔ کامیاب لوگ اپنے ساتھ یعنی اکیلے وقت گذارنا پسند کرتے ہیں کیونکہ اس میں فرد کا تدبر و تفکر اپنے عروج پر ہوتا ہے۔

۔:3معاشی؍مالی ترقی: Financial Development

۔:15سب سے پہلے اپنے آپ کوادائیگی کریں: آپ کی ذات کا حق سب سے مقدم رکھیں اور اپنی کمائی کا کم از کم 8سے10فیصد حصہ اپنی ذات پر خرچ کر کے اس سے تسکین اور افادہ ضرور حاصل کریں۔

۔:16اپنے خرچ پر نظر رکھیں:دنیا میں آمدنی بڑھانے سے نہیں بلکہ خرچ پر قابو پانے سے فرد کا جیون سُکھی ہوتا ہے۔

۔:17بچت کو اپنا شعار بنالیں: اپنی آمدنی کا کم ازکم 10فیصد حصہ بچائیں ورنہ آج کل کے دور میں آپ کو معاشی بدحالی اور پریشانی سے آپ کو کوئی نہیں بچا سکتا۔

۔:18اثاثے بڑھائیں اور خرچے کو گٹھائیں:آمدن بڑھے تو ایسی چیزوں پر خرچ کریں جن میں سے آپ کو آمدن ہو ناکہ آپ نئے خرچے پال لیں۔فضول خرچی کی بجائے سرمایہ کاری کریں۔

۔:19تنخواہ نہیں منافع پر توجہ دیں:کاروبار کو دنیا میں موجود رزق کا 90فیصد دیا گیا ہے۔ تنخواہوں سے کبھی کوئی امیر نہیں ہوا ۔ تنخواہ میں سے بھی کچھ بچا کر سرمایہ کاری کریں جب اس سے آپ کو منافع ملنا شروع ہو گا تو سوچ خودبخود بدلے گی۔

۔:20

آمدن کبھی سوچ سے زیادہ نہیں ہوتی: اپنی آمدن بڑھانے کے لئے سب سے پہلے اپنے سوچ کو بڑا کریں کیونکہ آمدنی کبھی سوچ سے بڑی نہیں ہوتی۔ :21رابطوں سے رزق کمائیے: دوسروں کی ساتھ پُر خلوص رابطے رکھیں اور دوستوں سے رابطے کبھی نہ ٹوٹنے دیں یہ آپ کا اصل سرمایہ ہیں۔

۔:4سماجی ترقی: Social Development

۔:22دوسروںکے معاملات میں حقیقی دلچسپی لیں:دوسروں کے ساتھ برتائو میں کوئی بھی مصنوعی رویہ، سوچ یا عمل آپکو دوسروں کی نظروں میں گرا دیتا ہے۔ اس لئے دوسروں کے معاملات میں جینوئن طور پر یعنی دل سے دلچسپی لیں۔

۔:23دوسروں کوتکریم دیں: جس عزت کے آپ دوسروں سے آپ طلبگار ہیں پہلے دوسروں کو دیں۔ دوسروں سے محبت کا اظہار ان کے عزت کر کے کریں تاکہ آپ کو لفظوں اور عمل میں یکسانیت ہو جو فرد کو حقیقی عزت دلاتی ہے۔

۔:24دوسروں کی مدد کرکے اپنی کامیابی کو یقینی بنائیں: آپ دوسروں کی جتنا زیادہ مدد کرتے ہیں آپ کی کامیابی کا درجہ یعنی لیول اُتنا ہی بڑھتا چلا جاتا ہے۔ دوسروں کو وُہ دیں جو اُن کو آپ سے درکار ہے اور بدلے میں وُہ پائیں جو آپ اُن سے چاہ رہے ہیں۔

۔:25دوسروں سے رویے لچکدار رکھیں: جامد رویے تعلقات کو مار دیتے ہیں اس لئے تعلقات بناتے ہوئے رویوں کو لچکدار رکھیں تاکہ دوسرے آپ سے ملنا پسند کریں ۔

۔:26دوسروں کو برادشت نہیں قبول کریں: دوسروں کو برداشت نہیں قبول کرنا سیکھیں کیونکہ تنوع اور اختلاف خدا کو پسند ہے اسی لئے تو ہم الگ الگ ہیں ورنہ خدا سب کو ایک جیسا بنا دیتا۔

۔:27دوسروںکی سنیں : پہلے دوسروں کی سُنیں پھر اپنی سنائیں۔ بولیں کم اور سُنیں زیادہ۔اس سے آپکی ہر دلعزیزی میں اضافہ یقینی ہے۔

۔:28دوسروں سے ملتے رہیں: فیس بک، ٹویٹر اور لنکڈ ان پر دوست بنانے اور بڑھانے کی بجائے حقیقی زندگی میں مُخلص دوستوں کی تعداد بڑھائیں جو آپ کا اصل سرمایہ ہیں۔

۔:5روحانی ترقی: Spirtual Development

۔:۔29

ہر کام کرتے ہوئے نیت نیک رکھیں: کسی بھی کام کو شروع کرتے ہوئے اپنی نیت کی پاکیزگی کا اہتمام کریں تاکہ منزلیں اور مُرادیں پانا آسان ہو جائے۔ :۔
۔30کامل ایمان و یقین کی زندگی جینا شروع کردیں: خدا پر کامل ایمان اور بھروسہ فرد کو بہت سی جسمانی اور نفسیاتی بیماریوں سے بچاتا ہے اور فرد کی ضرورت بھی ہے اس لئے اللہ پر مکمل یقین اور بھروسے کی زندگی گزاریں ۔

۔:31شکر گذاری سے رزق میں اضافہ کریں: عطا پر شکر کریں اور چھن جانے پر صبر کریں۔ اس عمل سے نعمتوں میں اضافی کر دیا جاتا ہے اور حزن و ملال میں کمی آتی ہے۔

۔:32مانگیں تاکہ آپ کو عطا کر دیا جائے:خدا سے مانگیں ، آپ کو عطا کر دیا جائے گا کیونکہ مانگنے والوں کو کبھی محروم نہیں رکھا جاتا مگر اخلاص اور عضز شرط ہے۔

۔:33اپنے آپ اور دوسروں کو معاف کرنا سیکھیں:اپنی اور دوسروں کی غلطیوں سے سیکھیں اورمعاف کر کے آگے بڑھ جائیں ۔ورنہ ذہنی عذاب اور بے سکونی کے لئے تیار ہو جائیں۔

۔:34دینے میں پائیں: دنیا میں جو بھی چیز آپ کو چاہیے وُہ علم ہو یا دولت ، سکون ہو یا رزق ،بس باٹنا شروع کردیں آپ کی جھولی سب سے پہلے بھر دی جائے گی۔

۔:35توازن قائم کریں:زندگی کے ہر شعبے اور جہت میں توازن لائیں کیونکہ توازن ہی دنیا کی سب سے بڑی خوبصورتی اور خیر ہے ۔

۔:6علمی ترقی: Intellectual Development

۔:36کتاب سے محبت کریں:کتاب سے دوستی نہیں محبت کریں یہ کبھی آپ کو مایوس نہیں کرے گی اور ان کی سنگت میں گذارا ہو وقت بھی کبھی ضائع نہیں ہوتا۔ اول تو ہفتے میں ایک کتاب نہیں تو مہینے میں ایک کتاب ضرور پڑھیں۔

۔:37اچھی باتیں پڑھنے سے زیادہ جینا زیادہ شروع کردیں:ایک ہزار اقوالِ زریں پڑھنے سے ایک لاکھ درجے بہتر ہے کہ آپ ایک قول کو جینا شروع کردیں یہی تو خیر و برکت کا سر چشمہ ہے۔

۔:38ہر روز کچھ نیا سیکھیں: سیکھنے کی کوئی عمر نہیں اس لئے آج سے ہی ہر روز کچھ نیا کریں اور کچھ نیا سیکھیں چاہے اس کیے لئے آپ کو کچھ بھلانا ہی کیوں نہ پڑے ۔

۔:39معلومات کی بجائے علم میں اضافہ کریں: کچھ جان لینا اُس وقت تک آپ کے لئے خیر نہیں ہے جب تک وُہ عملی زندگی میں علم کا روپ دھار کر کچھ فائد ہ نہیں دیتا۔ اس لئے صرف معلومات نہ بڑھائیں بلکہ علم میں اضافہ کریں

۔:40صرف مستند علم پر بھروسہ کریں:آپ کو ملنے والی ہر معلومات درست نہیں ہو سکتی اس لئے تحقیق کرنا سیکھیں اور صرف ان معلومات پر ہی بھروسی کریں جو مستند اور قابل ِ تصدیق ہوں۔

۔:41ٹی وی نہیں یو ٹیوب پر اپنا وقت گذاریں: ٹی وی پر فضول وقت گذارنے کی بجائے یو ٹیوب پر معیاری اور مستند مواد دیکھیں جو آپ کے علم و ہنر میں اضافہ کر سکے۔

۔:42سیکھنے کے بعد سکھانے کو اپنی زندگی کا مشن بنالیں: کسی بھی سیکھی ہوئی بات کو اپنی ذات کا مستقل حصہ بنانے کے لئے اسے دوسروں کو سکھائیں یہ آپ کے علم کا صدقہ بھی ہے اور اسے مستقل بنانے کا ناگزیر طریقہ بھی۔

۔:7پیشہ وارانہ ترقی: Professional Development

۔:43مان لیں رزق ڈگریوں اور نمبروں سے مشروط نہیں:بڑی کامیابی حاصل کرنے کیلئے فرد کی مسلسل جدوجہد ، مستقل مزاجی اور استقامت کا کردار کسی بھی ڈگری یا نمبروں سے زیادہ ہے۔ اس لئے ان صفات کو حاصل کرنے میں گولڈ میڈل اور اے گریڈ حاصل کریں جو کامیابی کی ضمانت ہے۔

۔:44مصروفیت نہیں نتائج پر توجہ دیں:کاموں میں مصروف نظر آنے کی بجائے کاموں کے نتائج لانے کی کوشش کریں کیونکہ آج کی دنیا میں نتائج کا سکہ سب سے زیادہ چلتا ہے۔

۔:45کام شروع کر کے مکمل کرنے والے بنیں:کام کو مکمل کرنے والوں کو ہی آج کی دنیا میں زیادہ مقام و مرتبہ دیا جاتا ہے۔ اچھے طور پر کاموں کو اختتام تک لانے والے بنیں جو کامیابیوں کی ضمانت ہے۔

۔:46کاموں میں تاخیر نہیں بلکہ فیصلے کریں: جلد فیصلے کرنے کی عادت ڈالیں چاہے اس میں غلطی ہی ہو جائے کیونکہ غلطی سے سیکھ کر آگے بڑھا جا سکتا ہے مگر کوئی بھی فیصلہ نہ کرنے سے سب کچھ رُک جاتا ہے۔

۔:47کاموں اور چیزوں کو سادہ رکھیں: مشکل سے بچ کر چلنا اور آسان اور سادہ رکھنا دنیا کے مشکل ترین کاموں میں سے ایک ہے۔ اسے اپنی زندگی کے ہر پہلو میں مقدم رکھیں ۔

۔:48مسائل نہیں حل پر توجہ دیں : مثالی یعنی آئیڈیل نہیںپریکٹیکل یعنی عملی اقدامات سے ہی کامیابی کی منزل ملا کرتی ہے۔ اس کے لئے لازم ہے کہ مسائل کی بجائے ان کے حل پر زیادہ توجہ دی جائے ۔

:49تبدیلی کوقبول کریں : ہر روز کچھ نیا سیکھیںتاکہ بدلتے وقت کے تقاضوں سے ہم آہنگ ہو کر نئے نئے چیلنجز کا مقابلہ کر سکیں۔ کیونکہ دنیا میں صرف تبدیلی ہے مستقل ہے۔

۔:50 فوری عمل کرنا شرو ع کریں:لاکھوں من گفتگو سے ایک تولہ عمل بہتر ہوتا ہے اس لئے آج سے عمل کی دنیا میں قدم رکھیں اور سوچ بچار سے نکل کر عمل سے زندگی کو شاندار بنائیں۔

Thanks 4 informative and useful sharing
 

intelligent086

TM Star
Nov 10, 2010
1,822
1,735
1,313
Lahore,Pakistan
اتنے اور مل جائیں تو زندگی سکون سے گزر سکتی ہے ;))
اتنے اور مل جائیں تو زندگی سکون سے گزر سکتی ہے ;))
اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے ،قرآن مجید کو باترجمہ بار بار پڑھیں ساتھ احادیث مبارکہ کا مطالعہ بزرگان دین کی تعلیمات کو معمول بنا لیں شاید ایسے سوالات کی ضرورت محسوس نہ ہو
 
Top
Forgot your password?