.�urdu Mehfil-e-shayari�.

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
وہ نرم لہجے میں کچھ تو کہے کہ لَوٹ آئے
سماعتوں کی زمیں پر پھوار کا موسم
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
پیام آیا ہے پھر ایک سروقامت کا
مرے وجود کو کھینچے ہے دار کا موسم
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
وہ آگ ہے کہ مری پور پور جلتی ہے
مرے بدن کو مِلا ہے چنار کا موسم
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
رفاقتوں کے نئے خواب خُوشنما ہیں مگر
گُزر چکا ہے ترے اعتبار کا موسم
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
رفاقتوں کے نئے خواب خُوشنما ہیں مگر
گُزر چکا ہے ترے اعتبار کا موسم
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
وہ میرا نام لیے جائے اور میں اُس کا نام
لہو میں گُونج رہا ہے پکار کا موسم
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
وہ میرا نام لیے جائے اور میں اُس کا نام
لہو میں گُونج رہا ہے پکار کا موسم
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
رفاقتوں کے نئے خواب خُوشنما ہیں مگر
گُزر چکا ہے ترے اعتبار کا موسم..........
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
جگا سکے نہ ترے لب، لکیر ایسی تھی
ہمارے بخت کی ریکھا بھی میر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
یہ ہاتھ چومے گئے، پھر بھی بے گلاب رہے
جو رت بھی آئی، خزاں کے سفیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
وہ میرے پاؤں کو چھونے جھکا تھا جس لمحے
جو مانگتا اسے دیتی، امیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
شہادتیں مرے حق میں تمام جاتی تھیں
مگر خموش تھے منصف، نظیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
کتر کے جال بھی صیاد کی رضا کے بغیر
تمام عمر نہ اڑتی، اسیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
پھر اسکے بعد نہ دیکھے وصال کے موسم
جدائیوں کی گھڑی چشم گیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
بس اک نگاہ مجھے دیکھتا، چلا جاتا
اس آدمی کی محبت فقیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
ردا کے ساتھ لٹیرے کو زادِ رہ بھی دیا
تری فراخ دلی میرے ویر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
کبھی نہ چاہنے والوں کا خون بہا مانگا
نگارِ شہرِ سخن بے ضمیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
کبھی نہ چاہنے والوں کا خون بہا مانگا
نگارِ شہرِ سخن بے ضمیر ایسی تھی
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
ﺍﺱ ﻟﺌﮯ ﺳﺎﺩﮪ ﻟﯽ ﺗﮭﯽ ﭼُﭗ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ

ﺍﺱ ﺳﮯ ﺑﮩﺘﺮ ﮐﻼﻡ ﺗﮭﺎ ﮨﯽ ﻧﮩﯿﮟ
 

Aks_

~ ʍɑno BɨLii ~
Hot Shot
جو میرے شعر میں مجھ سے زیادہ بولتا ہے
مَیں اُس کی بزم میں اِک حرفِ زیرلبِ بھی نہیں
 
Top