Aaj Ka Intikhaab............!!

Angela

~LONELINESS FOREVER~
TM Star
Apr 29, 2019
2,692
2,814
213
~Dasht e Tanhaayi~

نہ کسی پہ زخم عیاں کوئی، نہ کسی کو فکر رفو کی ہے
نہ کرم ہے ہم پہ حبیب کا، نہ نگاہ ہم پہ عدو کی ہے
صفِ زاہداں ہے تو بے یقیں، صفِ مے کشاں ہے تو بے طلب
نہ وہ صبح ورد و وضو کی ہے، نہ وہ شام جام و سبو کی ہے
نہ یہ غم نیا، نہ ستم نیا، کہ تری جفا کا گلہ کریں
یہ نظرتھی پہلے بھی مضطرب، یہ کسک تو دل میں کبھو کی ہے
کفِ باغباں پہ بہارِ گل کا ہے قرض پہلے سے بیشتر
کہ ہر ایک پھول کے پیرہن، میں نمود میرے لہو کی ہے
نہیں ‌خوفِ روزِ سیہ ہمیں، کہ ہے فیض ظرفِ نگاہ میں
ابھی گوشہ گیر وہ اک کرن، جو لگن اُس آئینہ رُو کی ہے
 
  • Like
Reactions: ujalaa and Kavi

Angela

~LONELINESS FOREVER~
TM Star
Apr 29, 2019
2,692
2,814
213
~Dasht e Tanhaayi~

وہ بتوں نے ڈالے ہیں وسوسے کہ دلوں سے خوفِ خدا گیا
وہ پڑی ہیں روز قیامتیں کہ خیالِ روزِ جزا گیا
جو نفس تھا خارِ گلو بنا، جو اٹھے تو ہاتھ لہو ہوئے
وہ نشاطِ آہ سحر گئی وہ وقارِ دستِ دعا گیا
نہ وہ رنگ فصلِ بہار کا، نہ روش وہ ابرِ بہار کی
جس ادا سے یار تھے آشنا وہ مزاجِ بادِ صبا گیا
جو طلب پہ عہدِ وفا کیا، تو وہ آبروئے وفا گئی
سرِ عام جب ہوئے مدّعی تو ثوابِ صدق و صفا گیا
ابھی بادباں کو تہہ رکھو ابھی مضطرب ہے رخِ ہوا
کسی راستے میں ہے منتظر وہ سکوں جو آکے چلا گیا
 
Last edited:
  • Like
Reactions: Kavi

Angela

~LONELINESS FOREVER~
TM Star
Apr 29, 2019
2,692
2,814
213
~Dasht e Tanhaayi~

آج اک حرف کو پھر ڈھونڈتا پھرتا ہے خیال
مد بھرا حرف کوئی، زہر بھرا حرف کوئی
دلنشیں حرف کوئی، قہر بھرا حرف کوئی
حرفِ نفرت کوئی، شمشیرِ غضب ہو جیسے
تا ابد شہرِ ستم جس سے تباہ ہو جائیں
اتنا تاریک کہ شمشان کی شب ہو جیسے
لب پہ لاؤں تو مرے ہونٹ سیہ ہو جائیں
آج ہر سُر سے ہر اک راگ کا ناتا ٹوٹا
ڈھونڈتی پھرتی ہے مطرب کو پھر اُس کی آواز
جوششِ درد سے مجنوں کے گریباں کی طرح
چاک در چاک ہُوا آج ہر اک پردۂ ساز
آج ہر موجِ ہوا سے ہے سوالی خلقت
لا کوئی نغمہ، کوئی صَوت، تری عمر دراز
نوحۂ غم ہی سہی، شورِ شہادت ہی سہی
صورِ محشر ہی سہی، بانگِ قیامت ہی سہی
 
  • Like
Reactions: ujalaa and Kavi

Angela

~LONELINESS FOREVER~
TM Star
Apr 29, 2019
2,692
2,814
213
~Dasht e Tanhaayi~

گو سب کو بہم ساغر و بادہ تو نہیں تھا
یہ شہر اداس اتنا زیادہ تو نہیں تھا
گلیوں میں پھرا کرتے تھے دو چار دوانے
ہر شخص کا صد چاک لبادہ تو نہیں تھا
منزل کو نہ پہچانے رہِ عشق کا راہی
ناداں ہی سہی ایسا بھی سادہ تو نہیں تھا
تھک کر یونہی پل بھر کے لئے آنکھ لگی تھی
سو کر ہی نہ اٹھیں یہ ارادہ تو نہیں تھا
واعظ سے رہ و رسم رہی رند سے صحبت
فرق ان میں کوئی اتنا زیادہ تو نہیں تھا
 
  • Like
Reactions: Kavi

Angela

~LONELINESS FOREVER~
TM Star
Apr 29, 2019
2,692
2,814
213
~Dasht e Tanhaayi~

یہ دُنیا ذہن کی بازی گری معلُوم ہوتی ہے
یہاں جس شے کو جو سمجھو وہی معلُوم ہوتی ہے
نکلتے ہیں کبھی تو چاندنی سے دُھوپ کے لشکر
کبھی خود دُھوپ نکھری چاندنی معلُوم ہوتی ہے
کبھی کانٹوں کی نوکوں پرلبِ گُل رنگ کی نرمی
کبھی پُھولوں کی خوشبُو میں انی معلُوم ہوتی ہے
وہ آہِ صُبح گاہی جس سے تارے کانپ اٹھتے ہیں
ذرا سا رُخ بدل کر راگنی معلُوم ہوتی ہے
نہ سوچیں تو نہایت لُطف آتا ہے تعلّی میں
جو سوچیں تو بڑی ناپختگی معلُوم ہوتی ہے
جو سچ پُوچھو تو وہ اِک ضرب ہے عاداتِ ذہنی پر
وہ شے جو نوعِ اِنساں کو بُری معلُوم ہوتی ہے
بَلا کا ناز تھا کل جن مسائل کی صلابَت پر
اب اُن کی نیؤ یک سر کھوکلی معلُوم ہوتی ہے
کبھی پُر ہول بن جاتا ہے جب راتوں کا سنّاٹا
سُریلے تار کی جھنکار سی معلُوم ہوتی ہے
اُسی نسبت سے آرائش پہ ہم مجبُور ہوتے ہیں
خُود اپنی ذات میں جتنی کجی معلُوم ہوتی ہے
پئے بیٹھا ہُوں جوش! علم و نظر کے سینکڑوں قُلزم
ارے پھر بھی بَلا کی تشنگی معلُوم ہوتی ہے
 
  • Like
Reactions: Kavi

Angela

~LONELINESS FOREVER~
TM Star
Apr 29, 2019
2,692
2,814
213
~Dasht e Tanhaayi~
اب تیری یاد سے وحشت نہیں ہوتی مجھ کو۔۔
زخم کھلنے سے اذیت نہیں ہوتی مجھ کو۔۔
اب کوئی آئے چلا جائے میں خوش رہتا ہوں،
اب کسی شخص کی عادت نہیں ہوتی مجھ کو۔۔
ایسا بدلا ہوں تیرے شہر کا پانی پی کر،
جھوٹ بولوں تو ندامت نہیں ہوتی مجھ کو۔۔
میں نے بھی کی ہے محبت سو کسی کی خاطر،
کوئی مرتا ہے تو حیرت نہیں ہوتی مجھ کو۔۔
اتنا مصروف ہوں جینے کی ہوس میں یاروں،
سانس لینے کی بھی فرصت نہیں ہوتی مجھ کو
 

Angela

~LONELINESS FOREVER~
TM Star
Apr 29, 2019
2,692
2,814
213
~Dasht e Tanhaayi~
ہر گز مجھے قبول نہیں ضد تیری کہ میں
خود داریوں کو بیچ کر پاس _ وفا کروں
یہ سر مجھے عزیز ہے عزت کی حد تلک
عزت نہیں تو سر کا میں گردن پہ کیا کروں؟
 
Top
Forgot your password?