راستے صاف بتاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں

intelligent086

Active Member

راستے صاف بتاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،
لوگ محفل کو سجاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

اہلِ دل گیت یہ گاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،
آنکھ رہ رہ کہ اُٹھاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

کہکشاں ، رہگزر ، چاند ، ستارے ، ذرے،
سب چمک کر یہ دکھاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

اپنے شاہکار پے خلاقِ دو عالم کو ہے ناز،
انبیاء جھومتے جاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

اہلِ ایماں کے لبوں پر ہے درود اور سلام،
یومِ میلاد مناتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

دل کو جلووں کی طلب ، آنکھ کو طیبہ کی لگن،
دیکھیے مجھ کو بلاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

اُنکی آمد کے پیامی ہیں صبا کے جھونکے،
پھول شاخوں کو ہلاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

بول بالا ہوا حق کا تو بُتانِ باطل،
خانہِ کعبہ سے جاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

رہگزر میں نظر آنے لگے ہر سو جلوے،
ذرے رہ رہ کے بتاتے کہ آپ آتے ہیں،

مرحبا صلی علٰی کی صدائیں ہیں لب پر،
لوگ صدقے ہوئے جاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

اُنکے جلووں سے نکھرنے لگی دل کی رونق،
میری تقدیر جگاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں،

چاند تاروں میں نصیر آج بڑی ہلچل ہے،
یہی آثار بتاتے ہیں کہ آپ آتے ہیں
 
Top